200 قیدی سزائیں پوری کرنے کے باوجود اسیری پر مجبور

October 26, 2015 5:13 pm0 commentsViews: 22

سینکڑوں قیدیوں نے عدالت عالیہ اور ما تحت عدالتوں میں جیل انتظامیہ اور حکام کیخلاف درخواستیں دائر کر دیں
بہت سے قیدی عمر قید کی سزائیں بھی پوری کر چکے ہیں، معیاد پوری ہونے کے باوجود ریلیز نہیں کیاجا رہا ، رپورٹ
کراچی( نیوز ڈیسک) جیلوں میں2 سو سے زائد مختلف میعاد کی سزائیں پانے والے قیدی سزائیں پوری ہونے کے باوجود اسیری کی زندگی گزارنے پر مجبور ہوگئے۔ سیکڑوں قیدیوں نے عدالت عالیہ اور ماتحت عدالتوں میں جیل حکام کے خلاف درخواستیں داخل کر دیں اس ضمن میں ذرائع نے بتایا کہ کراچی سمیت سندھ بھر کی جیلوں میں عمر قید سمیت دیگر مقدمات میں دو سو سے زائد قیدی سزائیں پوری ہونے کے باوجود جیل میں اسیری کی زندگی گزارنے پر مجبور ہیں جیلوں میں قتل، ڈکیتی اغواء برائے تاوان سمیت دیگر مقدمات میں سزائیں پوری کرنے والے ملزمان کو جیل انتظامیہ نے حکومت کی جانب سے مختلف تہوار کے موقع پر قیدیوں کو مختلف میعاد کی سزائیں معاف کرنے کا حکم دیا تھا لیکن سینکڑوں سزا یافتہ قیدی کئی سال سے ان معافی کی سزائوں سے محروم ہیں جبکہ کئی قیدی جو دیگر مقدمات میں ملوث ہیں عدالتوں نے ان کو بیک وقت مختلف میعاد کی سزائیں اور جرمانے سنائیں لیکن آرڈر میں تمام سزائیں ایک ساتھ چلنے کے حکم کے باوجود سزا کی میعاد پوری ہونے کے باوجود انکو کو ریلیز کرنے کے احکامات نہیں دئے گئے۔

Tags: