منی لانڈرنگ کیس، ایان علی پر استغاثہ کچھ بھی ثابت نہیں کر سکا

October 29, 2015 4:03 pm0 commentsViews: 15

میری موکلہ کو با عزت بری کیا جائے، وکیل لطیف کھوسہ کے ڈھائی گھنٹے کے دلائل
ایان علی اپنے وکیل کی تلاش میں سپریم کورٹ کی پارکنگ میں پھیرے لگاتی رہی، میڈیا کو جھلک دکھا کر رخصت ہو گئیں
راولپنڈی( یو پی پی) خصوصی عدالت نے منیٰ لانڈرنگ کیس میں ٹاپ ماڈل ایان علی کی بریت کی درخواست کی سماعت3نومبر تک ملتوی کردی‘ آئندہ تاریخ پر ایان علی کے وکیل سردار لطیف کھوسہ اپنے دلائل مکمل کریں گے‘ بدھ کو کسٹمز ٹیکسیشن اور اینٹی اسمگلنگ کی خصوصی عدالت کے جج رانا افتاب احمد نے منی لانڈرنگ کیس کی سماعت کی‘ سردار لطیف کھوسہ نے ڈھائی گھنٹے پر محیط اپنے دلائل میں کہا کہ میری موکلہ کو چار ماہ جیل میں رکھا گیا‘ رہائی کے بعد بھی کئی ماہ ہوگئے ہیں‘ استغاثہ کچھ بھی ثابت نہیں کرسکا ‘ باعزت بری کیا جائے‘ دریں اثناء ایان علی سپریم کورٹ کی پارکنگ کے پھیرے لگاتی رہی اور میڈیاکے نمائندوںکو ہلکی سی جھلک دکھا کر رخصت ہوگئیں‘ ماڈل چار لینڈ کروزر قافلوں کے ساتھ پارکنگ آئی تھیں‘ ماڈل اپنے وکیل سردار لطیف خان کھوسہ کی تلاش میں سپریم کورٹ آئی تھیں‘ ان کو وصول کرتے ہی راولپنڈی کسٹم عدالت سے روانہ ہوگئیں جبکہ ایان علی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عدلیہ کے فیصلے کا احترام کرتی ہوں اور مکمل اعتماد ہے‘ جس طرح میری ضمانت ہوئی ہے مجھے امید ہے کہ اسی طرح بے بنیاد مقدمے میں بھی سرخروہوں گی۔

Tags: