سپریم کورٹ کا ملک بھر میں شیشہ سینٹر فوری بند کرنے کا حکم

November 6, 2015 1:54 pm0 commentsViews: 29

سندھ اور پنجاب کے آئی جی پولیس کو شیشہ سینٹروں کے خلاف کارروائی کی رپورٹ آئندہ سماعت پر پیش کرنے کی ہدایت کردی
شیشہ سینٹر میں نشہ آور ایشاء استعمال ہورہی ہیں مگر ادارے ٹس سے مس نہیں ہوتے چیف جسٹس کے ریمارکس
اسلام آباد( خبر ایجنسیاں) سپریم کورٹ کے چیف جسٹس انور ظہیر جمالی نے ملک بھر میں شیشہ سینٹر فوری طور پر بند کرنے کا حکم دیتے ہوئے آئی جی پنجاب اور آئی جی سندھ کو ہدایت کی ہے کہ ان شیشہ سینٹروں کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے اس کی رپورٹ آئندہ سماعت پر عدالت میں پیش کی جائے۔ دوران سماعت چیف جسٹس پاکستان انور ظہیر جمالی نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ شیشہ سینٹر میں نشہ آور ادویات استعمال ہو رہی ہیں مگر ادارے ٹس سے مس نہیں ہوتے، کیا حکومتی اداروں نے سوچ لیا ہے کہ انہوں نے کوئی کام نہیں کرنا اور نوجوانوں کو نشے کی لعنت سے نہیں بچانا، کسی بھی سطح پر کوئی بھی کارروائی نہیں کی جا رہی لگتا ہے ادارے کوئی بہتری نہیں لانا چاہتے، شیشہ سینٹروں کی روک تھام سے متعلق بل 2014 سے زیر التوا ہے۔ باقی قانون سازی تو فوری ہو جاتی ہے مگر جس میں عوام الناس کا فائدہ ہو اس میں نہ جانے کیوں تاخیر ہوتی ہے۔ انہوں نے یہ ریمارکس جمعرات کو ایک درخواست کی سماعت کے دوران دئے ہیں۔ چیف جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی میں بینچ نے مقدمے کی سماعت شروع کی تو شیشہ سینٹروں کے حوالے سے سندھ حکومت نے کوئی قابل ذکر جواب نہ دیا جس پر عدالت نے برہمی کا اظہار کیا اور پنجاب اور سندھ کو حکم دیا ہے کہ دونوں صوبوں کے آئی جی شیشہ سینٹروں کے خلاف فوری اور بر وقت کارروائی کرتے ہوئے اس کی رپورٹ اگلی سماعت پر عدالت میں پیش کریں۔ عدالت نے مزید سماعت غیر معینہ مدت تک کیلئے ملتوی کر دی۔

Tags: