کراچی میں ایسے اسکول ہیں جہاں چھت اور دیواریں بھی نہیں سپریم کورٹ

November 10, 2015 5:51 pm0 commentsViews: 37

بچے ایسے اسکولوں میں آتے ہیں اور چلے جاتے ہیں‘ جعلی اساتذہ کا تقرر سیکریٹری تعلیم کے دستخط کے بغیر ممکن نہیں
جعلی اساتذہ بھرتی کیس میں200 سے زائد اساتذہ کی درخواست مسترد‘ سندھ ہائی کورٹ کا فیصلہ برقرار
کراچی( اسٹاف رپورٹر) سپریم کورٹ نے جعلی اساتذہ بھرتی کیس میں دوسو سے زائد اساتذہ کی درخواست مسترد کردی ہے۔ چیف جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی مین تین رکنی بنچ نے درخواست کی سماعت کی‘ سندھ ہائی کورٹ نے2011 ء میں دوسو بھرتیوں کے کیس میں محکمہ کی جانب سے جعلی بھرتی قرار دینے کو درست قرار دیا تھا اور سروس ٹریبونل کے فیصلے کوکالعدم قرار دیا تھا‘ سندھ ہائی کورٹ  کے اس فیصلے کو اساتذہ نے سپریم کورٹ میں چیلنج کیا تھا‘ تین رکنی بنچ نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد سندھ ہائی کورٹ کے فیصلے کو برقرار رکھا ہے۔ دوران سماعت عدالت کا کہنا تھا کہ کراچی میںایسے بھی اسکول ہیں جہاں نہ چھت ہے اور نہ ہی دیواریں یہاں صرف بچے آتے ہیں اور چلے جاتے ہیں اور جہاں چار دیواری ہے وہاں باتھ روم تک نہیں ہیں‘ عدالت کا کہنا تھا کہ جعلی اساتذہ کا تقرر سیکریٹری ایجوکیشن کے دستخط کے بغیر ممکن نہیں ہے‘ دوران سماعت ایڈیشنل سیکریٹری تعلیم ذاکر علی شاہ نے عدالت کو بتایا کہ سابق ای ڈی اوز ساجن ملاح‘ شمس الدین دل‘ عبدالجبار دایو اور دیگر کے مقدمات نیب کو بھیج دیئے گئے ہیں جس پر عدالت کا کہنا تھا کہ سیکریٹری ایجوکیشن کیخلاف نیب کو کیس کیوں نہیں بھیجا گیا۔

Tags: