عوام کو مہنگائی کے عفریت سے کب نجات ملے گی؟

February 13, 2020 2:05 pm0 commentsViews: 41

ملک میں مہنگائی کا عفریت آج بھی دندناتا نظر آتا ہے کیونکہ آئی ایم ایف کی ٹیم آج بھی پاکستان میں بیٹھ کر حکومت کی معاشی ٹیم کو منی بجٹ لاکر ٹیکس بڑھانے اور بجلی و گیس کے نرخوں میں اضافہ کرنے کی ڈکٹیشن دے رہی ہے۔ اس صورتحال میں حکومت کے لیے عوام کو مہنگائی سے مستقل بنیادوں پر خلاصی دلانے کی کوئی جامع اور ٹھوس پالیسی مرتب کرنا یقینا مشکل ترین کام ہے۔ اس کے باوجود وزیراعظم نے مناسب سبسڈی کے ذریعے غریب عوام کو مہنگائی میں ریلیف دینے کا عملی اقدام اٹھایا ہے اور مختلف سستی اسکیمیں بھی شروع کرائی گئی ہیں جن سے مہنگائی کے مارے عوام کو بہر صورت کچھ نہ کچھ ریلیف ملے گا۔
تاہم مہنگائی کم کرنے کے منصوبوں پر ان کی روح کے مطابق عملدرآمد ہونا ضروری ہے جس کے لیے حکومتی سطح پر آج بھی سنجیدگی کا فقدان نظر آتا ہے۔ اس کا اندازہ اس سے ہی لگایا جاسکتا ہے کہ وزیراعظم کے ریلیف پیکیج کے اعلان سے قبل یوٹیلٹی اسٹورز پر گھی اور چینی نرخ بڑھا کر اس پیکیج کو عوام کے لیے غیر موثر بنانے کی کوشش کی گئی۔ وزیراعظم کو اس صورتحال کا نوٹس لینا چاہیے اور عوام کو حقیقی ریلیف کی فراہمی کے لیے اقدامات کرنا چاہیے، تاکہ غریب عوام مہنگائی کی عفریت سے نجات حاصل کر سکیں۔