نائن زیرو پر تمام دفاتر کھول دیئے گئے ایم کیو ایم ختم کرنے کا اعلان واپس اب کسی کے ساتھ رعایت نہیں ہوگی الطاف حسین

July 23, 2015 5:33 pm0 commentsViews: 22

الطاف حسین نے آرمی چیف جنرل راحیل شریف کو بذریعہ فیکس اپنا اہم بیان بھجوا دیا
رابطہ کمیٹی بزدلانہ طریقے سے پارٹی چلا رہی ہے، ایم کیو ایم کے خلاف ہونے والے میڈیا ٹرائل پر ہدایت کے باوجود احتجاج نہیں کیا جا سکا ایم کیو ایم اور اس کے تمام شعبہ جات ختم کرنے کا اعلان کرتا ہوں الطاف حسین کا رات گئے خطاب، رابطہ کمیٹی کے عہدیداران کی جانب سے معافی مانگنے کے بعد اعلان واپس لے لیا
الطاف حسین کی جانب سے ایم کیو ایم ختم کرنے کے اعلان کے بعد رینجرز کی بھاری نفری نے نائن زیرو کا گھیرائو کر لیا تھا جو کہ آج صبح ختم کر دیا گیا، ایم کیو ایم کارکنوں اور رہنمائوں کی بلا جواز گرفتاریوں کیخلاف بڑے پیمانے پر احتجاج کرنے کیلئے حکمت عملی تیار کی جارہی ہے، ذرائع کا انکشاف
کراچی( مانیٹرنگ ڈیسک/کرائم رپورٹر) متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین کی جانب سے ایم کیو ایم ختم کرنے کا اعلان واپس لئے جانے کے بعد آج صبح نائن زیرو پر تمام دفاتر کھل گئے اور معمول کے مطابق کام شروع ہوگیا‘ الطاف حسین نے بدھ کی شب ایم کیو ایم کے تمام شعبہ جات کو کام کرنے سے روک دیا تھا اور دفاتر کو تالے لگادیئے گئے‘ یہ صورتحال قائد ایم کیو ایم الطاف حسین کی رابطہ کمیٹی سے ناراضگی کے بعد پیدا ہوئی جس کے بعد رابطہ کمیٹی کے اراکین اور مختلف شعبہ جات کے ذمہ داران کی بڑی تعداد متحدہ کے قائد الطاف حسین کی رہائش گاہ نائن زیرو پر جمع ہوگئی۔ اس دوران رینجرز کی بھاری نفری نے بھی کسی نا خوشگوار صورتحال سے نمٹنے کیلئے نائن زیرو کا گھیرائو کرلیا تھا‘ جس کے باعث علاقہ مکینوں میں سخت خوف و ہراس پھیل گیا تاہم الطاف حسین کی جانب سے ایم کیو ایم ختم کرنے کا اعلان واپس لئے جانے کے بعد آج صبح رینجرز نے گھیرائو ختم کردیا‘ الطاف حسین نے رات گئے خطاب کے دوران کارکنوں کے اصرار پر اپنا فیصلہ واپس لیتے ہوئے تمام شعبہ جات کو واپس کام کرنے کی اجازت دے دی۔الطاف حسین کا رات دیر گئے لندن سے کارکنوں اور عہدیداران سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ایم کیو ایم کے خلاف ہونے والے میڈیا ٹرائل پر رابطہ کمیٹی ہدایت کے باوجود احتجاج بھی نہ کرسکی، رابطہ کمیٹی بزدلانہ طریقے سے پارٹی چلا رہی ہے جس کے باعث ایم کیو ایم کے تمام شعبہ جات کو ختم کرنے کا اعلان کرتا ہوں۔ ایم کیو ایم کے تمام شعبہ جات کو ختم کرنے کے اعلان کے بعد رابطہ کمیٹی اور عہدیداران کی بڑی تعداد نائن زیرو پر جمع ہو گئی اور الطاف حسین سے معافی مانگی جس کے بعد الطاف حسین نے اپنا فیصلہ واپس لے لیا۔الطاف حسین کا کہنا تھا کہ پارٹی کو بزدلانہ طریقے سے نہیں چلایا جا سکتا، اب کسی ساتھی کیساتھ رعایت نہیں کی جائیگی۔ ان کا کہنا تھا کہ برطانیہ کے قوانین کا احترام کرتا ہوں، اگر کسی مشکل میں پھنس جائوں تو کارکن گھبرانے کے بجائے ہمت اور حوصلے سے کام لیں‘ علاوہ ازیں متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین نے اپنا ایک اہم بیان چیف آف آرمی اسٹاف جنرل راحیل شریف کو بذریعہ فیکس ارسال کیا ہے‘ بیان جس نمبر پر بھیجا گیا وہ جنرل راحیل شریف کی سرکاری رہائش گاہ کے آپریٹر سے لیا تھا اور ان کے اے ڈی سی کے ذریعے یہ بیان بھجوایا گیا تھا لیکن میرا بیان ملنے کی اب تک تصدیق نہیں کی گئی ہے‘ الطاف حسین نے چیف آف آرمی اسٹاف جنرل راحیل شریف سے اپیل کی کہ اگر انہیں میرا بیان نہیں ملا تو وہ اپنے اے ڈی سی سے انٹر نیشنل سیکریٹریٹ فون کراکے ای میل ایڈریس لے لیں اور اپنا ای میل ایڈریس دے دیں تاکہ اس پر وہ بیان دوبارہ بھیجا جاسکے جو ملکی استحکام کے حوالے سے ہے‘ دوسری طرف ذرائع کے مطابق الطاف حسین کی جانب سے شدید غصے کااظہار کے بعد ایم کیو ایم رابطہ کمیٹی نے رہنمائوں اور کارکنان کی بلا جواز گرفتاری کیخلاف بڑے پیمانے پراحتجاج کیلئے حکمت عملی تیار کرلی ہے جس میں غیر معینہ مدت کی ہڑتال کا آپشن پر بھی غور کیا جارہا ہے۔

Tags: