آئی ایم ایف کے دبائو پر بجلی صارفین پر 10 فیصد ود ہولڈنگ ٹیکس لگادیا گیا

July 23, 2015 6:04 pm0 commentsViews: 34

کروڑوں گھریلو بجلی صارفین کو 100 روپے ود ہولڈنگ ٹیکس ادا کرنا ہوگا‘ 400 روپے سے کم بل ادا کرنیوالے مستثنیٰ ہوں گے
کمرشل اور گھریلو ٹیلی فون صارفین کے ایک ہزار روپے سے زائد بلوں پر 10 فیصد ود ہولڈنگ ٹیکس لاگو ہوگا
فیصل آباد( آن لائن) وزارت خزانہ نے آئی ایم ایف کے دبائو کے تحت ملک بھر کے بجلی کے کروڑوں گھریلو صارفین کے ساتھ ساتھ لینڈ لائن رکھنے والے ٹیلی فون صارفین اور انٹر نیٹ کنکشن حاصل کرنے والے صارفین پر 10 فیصد تک ود ہولڈنگ ٹیکس فوری نافذ کر دیا ہے جبکہ ملک بھر کے صنعت کاروں پر 10 فیصد کی بجائے صرف5 فیصد ود ہولڈنگ ٹیکس لگایا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق اس سلسلے میں فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے ٹیکس وصولی کیلئے متعلقہ اداروں کو تحریری ہدایت جاری کر دی، ایف بی آر کے مطابق جو نیا ٹیکس عائد کیا گیا ہے وہ گھریلو بجلی صارفین جو ہر ماہ600 سے 800 روپے تک بجلی استعمال کرتے ہیں جنہیں دیگر ٹیکسوں کے علاوہ اب مزید100 روپیہ ود ہولڈنگ ٹیکس ادا کرنا پڑے گا۔ جبکہ400 روپے سے کم استعمال کرنے والے بجلی صارفین اس ٹیکس سے مستثنیٰ ہوں گے۔ ذرائع سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ایف بی آر نے واپڈا حکام کو تحریری طور پر آگاہ کیا ہے کہ800 سے1000 روپے تک بجلی بل پر 160 روپے ، 1000سے 1500 روپے تک 300 روپے جبکہ 4500 سے6000 روپے بل پر صارفین کو500 روپے ٹیکس ادا کرنا ہوگا۔ نئے ٹیرف کے مطابق20000روپے سے زائد کمرشل صارفین پر10 فیصد اور صنعتوں کے مالکان کو10 فیصد کی بجائے ان پر5 فیصد ٹیکس لاگو ہوگا۔ اسی طرح گھریلو اور کمرشل صنعتوں میں نصب ہونے والے ٹیلی فون کے بلوں پر صرف ایک ہزار روپے تک چھوٹ دی گئی ہے جن صارفین کا ایک ہزار سے زائد بل ہوگا انہیں10 فیصد ود ہولڈنگ ٹیکس ادا کرنا ہوگا۔ اسی طرح جن لینڈ لائن ٹیلی فون پر انٹر نیٹ کنکشن ہوں گے انہیں بھی10 فیصد ود ہولڈنگ ٹیکس دینا پڑے گا۔

Tags: