ملک کو غیر مستحکم کرنے کی سازش پر عمران خان کو گرفتار کیا جائے‘الطاف حسین

July 24, 2015 4:27 pm0 commentsViews: 17

جمہوریت کی بساط لپیٹنے کیلئے عمران خان کے دھرنے کا انتظام کرنے والے عناصر کے خلاف تحقیقات سپریم کورٹ کے ججوں سے کرائی جائے
دھرنے کیلئے رقوم حاصل کرنے کی غرض سے اغواء برائے تاوان کی وارداتیں کرنے والوں کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی جاتی‘نائن زیرو پر خطاب
لندن( نیوز ڈیسک) متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین نے کہا ہے کہ دھاندلی کے بارے میں عدالتی کمیشن کے فیصلے کے بعد سپریم کورٹ کے ججوں پر مشتمل کمیشن تشکیل دیا جائے جو اس بات کی تحقیقات کرے کہ پاکستان سے جمہوریت کی بساط لپیٹنے کیلئے عمران خان کے دھرنے کے پیچھے کون کونسے عناصر ملوث تھے اور دھرنے کا انتظام کرنے اور اس کیلئے سرمایہ فراہم کرنیوالے عناصر کونسے تھے‘ نائن زیرو پر رابطہ کمیٹی اور دیگر شعبہ جات کے ارکان سے گفتگو میں الطاف حسین نے کہا کہ جن سیاستدانوں اور صحافیوں نے دھرنے کی سپورٹ کی‘ وہی لوگ آج بتارہے ہیں کہ کس طرح سرکاری ایجنسیوں کے بڑوں نے پی ٹی آئی کے جلسوں اور دھرنے کیلئے اربوں روپے فراہم کئے جس میں پلاٹوں کی فروخت کے ساتھ ساتھ اغواء برائے تاوان کی وارداتوں سے حاصل ہونیوالی بھاری رقوم بھی شامل تھیں۔د ھرنے کے دوران سرکاری و نجی اداروں‘ صحافیوں‘ پولیس پر حملے کئے گئے‘ ملک کو غیر مستحکم کرنے کی سازش پر عمران خان اور ان کے حواریوں کو فی الفور گرفتار کیاجائے اور سر عام سزا دی جائے‘ آج دوسروں پر تھوکا ہوا خود ان کے منہ پر آگیا ہے۔ ایم کیو ایم پرتو زکوٰۃ فطرہ وصول کرنے پر بھتے کا جھوٹا الزام لگایا جاتا ہے لیکن پی ٹی آئی کے دھرنے کیلئے رقوم حاصل کرنے کی غرض سے اغواء برائے تاوان کی وارداتیں کرنے والوں کیخلاف کارروائی نہیں کی جاتی‘ تمام تر حقائق سامنے آگئے ہیں تو پی ٹی آئی میں شامل لوگوں کو چاہئے کہ وہ اپنی عاقبت سنوارنے کیلئے پی ٹی آئی چھوڑ دیں ۔

Tags: