دہشتگردوں کی معاونت ڈی ایم سی کے ڈپٹی ڈائریکٹر اور متحدہ کے کارکنان 90 دن کیلئے رینجرز کے حوالے

July 24, 2015 4:46 pm0 commentsViews: 21

ڈائو میڈیکل کالج کا ڈپٹی ڈائریکٹر ایم بی بی ایس ڈاکٹر ہے جو ایم کیو ایم کے کارکنوں کو کارروائیوں کیلئے ایمبولینس اور مالی معاونت فراہم کرتا تھا
انسداد دہشت گردی کی عدالت نے پولیس اہلکار کے قتل میں ملوث متحدہ کے 2 مفرور کارکنوں کو گرفتار کرکے پیش کرنے کا حکم دیدیا
کراچی( اسٹاف رپورٹر) انسداد دہشت گردی کی عدالت نے سیاسی جماعت کے دہشت گردوں کو لاجسٹک سپورٹ اور مالی معاونت فراہم کرنے میں گرفتار ڈائو میڈیکل یونیورسٹی کے ڈپٹی ڈائریکٹر سمیت متحدہ کے سیکٹر انچارج و دیگر کارکنوں کو90 روزہ نظر بندی پر رینجرز کے سپرد کر دیا۔ جمعرات کو رینجرز نے دہشت گردوں کو لاجسٹک اور مالی معاونت فراہم کرنے کے الزام میں ڈائو میڈیکل یونیورسٹی کے ڈاکٹر ملزم گل حسن زیدی کو انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کیا اور بتایا کہ ملزم ڈی ایم سی میں ڈپٹی ڈائریکٹر اور ایم بی بی ایس ڈاکٹر ہے۔ ایم کیو ایم کے دہشت گردوں کو مختلف کارروائیوں کے لئے ایمبولینس اور مالی معاونت فراہم کرتا تھا جس پر عدالت نے نظر بندی کی درخواست منظور کرتے ہوئے ملزم کو رینجرز کے حوالے کر دیا۔ دریں اثناء انسداد دہشت گردی کی عدالت نے گارڈن سے گرفتار دہشت گردی کی وارداتوں میں ملوث متحدہ کے سیکٹر انچارج ارشد اقبال عرف کاٹن کو90 روز کیلئے رینجرز جبکہ لیاری سیکٹر کے ممبر نجم مصطفیٰ عرف نجمی کو دھماکہ خیز مواد رکھنے کے الزام میں7 دن کے جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر دیا۔ چائنہ کٹنگ اور اراضی کی غیر قانونی الاٹمنٹ کے الزام میں گرفتار کے ڈی اے افسران فیصل مسعود اور مجیب اللہ کے جسمانی ریمانڈ میں7 دن کی توسیع کر دی گئی۔ علاوہ ازیں انسداد دہشت گردی کی عدالت نے پولیس اہلکار قتل کیس میں مفرور2 متحدہ کارکنوں ارشاد اور نعمان کی گرفتاری کا حکم دیتے ہوئے ملزمان کو پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔

Tags: