ود ہولڈنگ ٹیکس نافذ ہونے کے بعد تاجروں نے نقدی اور پرچی پر کاروبار شروع کردیا

July 25, 2015 2:53 pm0 commentsViews: 35

بینکوں کے ذریعے لین دین میں آٹھ گنا کمی ہوگئی‘ ٹیکس سے بچنے کیلئے تاجر زیادہ تر نقدی پر کام کررہے ہیں
تاجروں نے احتجاج کے پہلے مرحلے میں بینکوں میں جمع شدہ اپنی رقوم نکلوانا شروع کردی ہیں
لاہور( کامرس ڈیسک) بینکوں کے ذریعے تمام طرح کے لین دین پر ود ہولڈنگ عائد ہونے کے بعد ملک کے کمرشل بینکوں کی شاخوں سے مالی منتقلیاں 8 گنا کم ہوگئی ہیں‘ تاجروں نے کاروبار نقدی یا پرچی پر کرنا شروع کردیاہے‘ تاکہ ود ہولڈنگ ٹیکس سے بچا جاسکا بینک حکام نے انکشاف کیا ہے کہ اکبری منڈی جو پاکستان میں اجناس کی سب سے بڑی مارکیٹ ہے وہاں صرف ایک بینک کی شاخ سے مالی لین دین ماہانہ40کروڑ روپے سے کم ہو کر 5کروڑ روپے رہ گیا ہے‘ بینکنگ حکام کے مطابق تاجروں نے پہلے قدم کے طور پر اپنی جمع رقوم واپس نکالنی شرو ع کردی ہیں۔ انکے مطابق بینکوں کے مرکزی دفاتر نے اس صورتحال کا نوٹس لینا شروع کردیا ہے کیوں کہ بینک منیجر ز عائد اعشاریہتین فیصد ود ہولڈنگ ٹیکس کی وجہ سے کھاتوں کو مستحکم کرنے یا بڑھانے سے قاصر ہیں‘ دوسری جانب ٹیکس نیٹ میں آنیوالی کمپنیوں اور سپلائرز کو بھی مشکلات کا سامنا ہے کیوں کہ نقدی کی صور ت میں بھاری رقوم کی ادائیگی غیر محفوظ ہوتی ہیں اب تاجر5 ہزار کے نوٹوں میں کاروبار کو ترجیح دے رہے ہیں۔

Tags: