ود ہولڈنگ ٹیکس کے معاملے پر حکومت اور تاجروں میں مذاکرات آج ہونگے

July 27, 2015 4:59 pm0 commentsViews: 19

حکومت نے تاجر تنظیموں کے مطالبے پر ود ہولڈنگ ٹیکس کی شرح میں نمایاں کمی کا فیصلہ کرلیا ہے‘ آج تاجروں کو آگاہ کیا جائے گا
مذاکرات کامیاب ہونے کی صورت میں تاجروں کو ہڑتال کی کال واپس اور بینکوں سے لین دین بحال کرنا ہوگا
فیصل آباد( نیوز ڈیسک) ملک بھر کے تاجروں‘ صنعتکاروں کے وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار اور ایف بی آر کے چیئرمین کے ساتھ ود ہولڈنگ ٹیکس اور دیگر ٹیکسوں کے بارے میں مذاکرات آج اسلام آباد میں ہوں گے‘ باوثوق ذرائع نے بتایا کہ بینکوں کی ٹرانزٹ پر عائد ود ہولڈنگ ٹیکس کی شرح0.6 فیصد کے بجائے0.01کرنے پر متفقہ فیصلہ کرلیا جائیگا‘ واضح رہے کہ ملک بھر کی تاجر تنظیموں‘ صنعتکاروں اور دکانداروں نے حکومت کی جانب سے بینکوں کے لین دین پر جو ود ہولڈنگ ٹیکس عائد کیا تھا‘ اس پر تاجر برادری نے بھر پور احتجاج کیا تھا۔ صورت حال کے پیش نظر وزیراعظم نے وزیر خزانہ کو ہدایت کی کہ وہ فوری طور پر ملک بھر کی تاجر تنظیموں سے مذاکرات کرکے ود ہولڈنگ ٹیکسوں کی شرح میں کمی کا فارمولا نکالے‘ چنانچہ وزیر خزانہ نے آج اسلام آباد میں ملک بھر کی تاجر تنظیموں کے نمائندوں کا اجلاس طلب کیا ہے۔ اجلاس میں تاجر نمائندوں کے علاوہ قومی اسمبلی کے رکن و چیئرمین سینیٹ کمیٹی برائے خزانہ رانا محمد افضل‘ چیئرمین سینیٹ کمیٹی و رکن قومی اسمبلی میاں عبدالمنان اور مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما لاہور سے رکن قومی اسمبلی پرویز ملک بھی مذاکرات میں شریک ہوں گے۔ ذرائع نے بتایا کہ حکومت نے تاجر تنظیموں کے مطالبے پر ود ہولڈنگ ٹیکس کی شرح میں نمایاں کمی کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور مذاکرات کے دوران تاجروں کو اس فیصلہ سے آگاہ کردیا جائیگا تاکہ تاجر تنظیمیں ہڑتال کی کال واپس لیتے ہوئے بینکوں سے اپنا لین دین جاری رکھ سکیں۔

Tags: