جمشید زون کے ڈرائیوروں کی پولیس گردی کیخلاف ہڑتال

July 30, 2015 4:21 pm0 commentsViews: 22

کچرہ گاڑیاں کورنگی بند پر کچرہ پھینکنے گئیں تو پولیس نے ڈرائیوروں کو پکڑ کر زدوکوب کیا اور رقم چھین لی
ڈرائیوروں کے تحفظ کی فراہمی تک کام بند رکھاجائے گا،تھانے کا گھیرائو کرینگے ذوالفقار شاہ
کراچی( اسٹاف جمشید زون بلدیہ شرقی کراچی کے گاربیج کلیکشن پر مامور ڈرائیوروں نے قانونی طور پر کورنگی بند پر قائم جی ٹی ایس پر پولیس گردی کے خلاف ہڑتال کرتے ہوئے کام بند کردیا جبکہ ڈرائیوروں کو تحفظ نہ ملنے تک کام بند رکھنے کا اعلان کیا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز شام6 بجے جمشید زون کی2 کچرا گاڑیاں کورنگی بند پر قائم جی ٹی ایس پر کچرا ڈالنے پہنچیں تو وہاں شریف آباد کورنگی انڈسٹریل ایریا پولیس کی موبائل نے ڈرائیور افتخار اور خالد کو گاڑی سے اتار کر گالیاں دیں اور گریبان پکڑ کر زدو کوب کیا اور مار پیٹ کرکے منہ پر کپڑا ڈال کر تھانے لے گئے اور ان کی جیبوں سے بالترتیب 1700 اور2300 روپے نکال لئے۔ واقعے کی اطلاع ملتے ہی ڈرائیوروں میں سخت غم و غصے کی لہر دوڑ گئی اور یونین رہنمائوں اقبال شاہ، جان محمد بلوچ، غلام مصطفیٰ ، رحیم داد و دیگر نے محمود آباد ورکشاپ میں تمام کچرا گاڑیاں کھڑی کر دیں اور اس موقع پر اطلاع ملتے ہی میونسپل ورکرز ٹریڈ یونینز الائنس و سجن یونین( سی بی اے) کے صدر ذوالفقار شاہ نے ڈائریکٹر ہیلتھ  جاوید کلہوڑو اور ایڈمنسٹریٹر بلدیہ شرقی صلاح الدین سے رابطہ کرکے انہیں ملازمین کی تشویش سے آگاہ کیا اور اعلان کیا کہ جب تک ڈرائیوروں کو تحفظ فراہم نہیں کیا جاتا اس وقت تک کام بند رکھا جائے گا اور انہیں آگاہ کیا کہ اگر آئندہ پولیس کی جانب سے قانونی طور پر قائم جی ٹی ایس پر کچرا ڈالنے پر کسی عملے کیخلاف کارروائی کی گئی تو پھر اس تھانے کا کچرے سے بھری گاڑیوں کے ہمراہ گھیرائو کرکے تھانے کو کچرا کنڈی میں تبدیل کر دیا جائے گا۔

Tags: