محکمہ تعلیم کے ملازمین کی دستاویزات توثیق کمیٹی میں پیش کرنیکا فیصلہ

July 30, 2015 4:58 pm0 commentsViews: 29

28 اگست کے بعد چیئرمین اینٹی کرپشن کو جعلی ملازمین کی فہرست پیش کی جائے گی
تمام محکموں کے افسران سے رپورٹ طلب کر رہے ہیں، چیئرمین اینٹی کرپشن کی بات چیت
کراچی( اسٹاف رپورٹر) چیف سیکریٹری سندھ محمد صدیق میمن کی زیر صدارت اعلیٰ سطحی اجلاس میں اکائونٹنٹ جنرل سندھ احسان کبیر  نے محکمہ تعلیم کے ان ملازمین کے بارے میں رپورٹ پیش کی جن کے تقرر کی دستاویزات اور دیگر ریکارڈ کی توثیق نہیں ہو سکی اور جنہیں غیر قانونی انکریمنٹس اور تنخواہ سے متعلق مراعات بھی اضافی طور پر دی جا رہی تھیں۔ اجلاس کے شرکاء چیئرمین اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ ممتاز علی شاہ، سیکریٹری تعلیم ڈاکٹر فضل پیچوہو، سیکریٹری امپلی مینٹیشن سید طارق محمو دجعفری، اسپیشل سیکریٹری ایجوکیشن عالیہ شاہد، اسپیشل سیکریٹری خزانہ حسین رضوی، ڈائریکٹر چیف منسٹر انسپیکشن ٹیم نذیر ڈھون اور دیگر افسران نے رپورٹ پر تبادلہ خیال کیا اور متفقہ طور پر فیصلہ کیا گیا کہ تمام اضلاع کے ڈائریکٹر تعلیم اپنے اپنے ضلع کے ملازمین کے تقرر نامے ، پرسنل فائلز، سروس بکس اور دیگر متعلقہ دستاویزات 4 اگست سے28 اگست 2015ء تک محکمہ تعلیم کراچی کے دفتر میں توثیق و جانچ پڑتال کے لئے فراہم کریں گے اور اس سلسلے میں توثیقی کمیٹی کو پیش کریں گے۔ 28 اگست کے بعد چیئر مین کو ملازمین کی فہرست پیش کی جائے گی جن کے خلاف ایف آئی آر درج کرانے کے ساتھ ساتھ ادا شدہ تنخواہ کی واپسی بھی عمل میں لائی جائے گی۔ جبکہ محکمہ تعلیم کے ڈائریکٹر ز، ایڈیشنل ڈائریکٹرز اور دیگر افسران کے خلاف بھی محکمہ اینٹی کرپشن کے تحت تادیبی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ چیئر مین اینٹی کرپشن نے بات چیت کے دوران انکشاف کیا کہ وہ افسران سے تمام محکموں کی رپورٹ طلب کر رہے ہیں تا کہ کرپشن کے خلاف قواعد و ضوابط کے تحت کارروائی یقینی ہوسکے۔

Tags: