کراچی میں اسلحہ افغانستان اور بلوچستان سے لایا جاتا ہے‘آئی جی سندھ

July 31, 2015 5:02 pm0 commentsViews: 26

ٹارگٹ کلنگ اور اغواء کے کیسز میں کافی کمی واقع ہوئی ہے‘ صفورا گوٹھ‘ شکار پور بم دھماکہ اور ڈاکٹر خالد کے قتل میں ملوث ملزمان گرفتار کرلئے
صوبائی حکومتوں کو اسلحہ ہادی انڈسٹری ٹیکسلا اور پی او ایف واہ سے خریدنے کا پابند کیا جائے‘ قائمہ کمیٹی برائے دفاعی پیداوار کا اجلاس
اسلام آباد( آن لائن) قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے دفاعی پیداوار میں آئی جی سندھ کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ کراچی میں اسلحہ افغانستان اور بلوچستان سے آتا ہے کراچی میں ٹارگٹ کلنگ اور غواء کے کیسز میں کافی کمی واقع ہوئی ہے۔ صفورا گوٹھ، شکار پور بم دھماکا اور ڈاکٹر خالد کے قتل میں ملوث ملزمان کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ دوسری جانب کمیٹی نے دفاعی سازو سامان کے حصول کے لئے صوبوں اور اسلحہ ساز کمپنیوں کو معاملات حل کرکے رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔ قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے دفاعی پیداوار کا اجلاس چیئر می

جرائم پیشہ ایس ایچ اوز کی تعیناتیوں کاسلسلہ دوبارہ شروع
ایپکس کمیٹی کی رپورٹ پر 33 ایس ایچ اوز کو جرائم پیشہ افراد کی معاونت پر ہٹایاگیاتھا
پولیس اہلکار کے قتل کے الزام میں جیل کاٹنے والے ایس ایچ او دوبارہ تعینات
کراچی( کرائم رپورٹر) شہر قائد میں جرائم پیشہ ایس ایچ اوز ہٹائے جانے کے بعد دوبارہ جرائم پیشہ ایس ایچ اوز کی تعیناتی کا سلسلہ جاری۔ تفصیلات کے مطابق کراچی پولیس چیف مشتاق مہر نے انسپکٹر رحمت اللہ کو ایس ایچ او پاک کالونی تعینات کر دیا ہے۔ مذکورہ افسر نیو کراچی میں پولیس اہلکاروں کو قتل کرنے کے الزام میں گرفتار ہو کر جیل کاٹ چکا ہے۔ جبکہ ایک کمیٹی کی رپورٹ پر33 ایس ایچ اوز کو کرائم میں اور جرائم پیشہ افراد کی معاونت کرنے کے الزام میں ہٹایا گیا تھا۔ تاہم رحمت اللہ کو نارتھ ناظم آباد کے بعد پاک کالونی میں ایس ایچ او تعینات کر دیا گیا ہے۔ ن کمیٹی خواجہ سہیل منصور کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہائوس میں منعقد ہوا۔ اس موقع پر وفاقی وزیر دفاعی پیداوار رانا تنویر حسین نے کمیٹی کو بتایا کہ صوبائی حکومتوں کو پابند کیا جائے کہ ہادی انڈسٹری ٹیکسلا اور پی او ایف واہ سے سازو سامان خریدنے اور کوئی مسئلہ پیش آتا ہے تو اسے ہم سے ڈسکس کیا جائے۔ چیئر مین کمیٹی نے کہا ہے کہ جو ملکی ادارے اسلحہ بنا رہے ہیں ان سے خریداری کو فوقیت دی جانی چاہئے۔

Tags: