آج صبح، تاجروں کی ہڑتال، آدھی مارکیٹیں کھلی آدھی بند

August 1, 2015 5:06 pm0 commentsViews: 35

حکومت کی جانب سے بینک ٹرانزیکشن پرودہولڈنگ ٹیکس لگائے جانے کیخلاف تاجروں کے ایک گروپ نے ہڑتال کی ہے، دوسرے گروپ نے ہڑتال سے لاتعلقی اور 5اگست کا ہڑتال کا اعلان ہے

سندھ تاجر اتحاد، انجمن تاجران پاکستان اور الیکٹرانکس اینڈ اسمال ٹریڈرز ایسوسی ایشن کی اپیل پر آج شہرکی بیشتر مارکیٹوں میں ہڑتال کی جارہی ہے اور دکانیں بند ہیں، مارکیٹوں میں ہڑتال کے حوالے سے بینر بھی آویزاں ہیں، شہر میں ٹرانسپورٹ بھی معمول سے کم تعداد میں چل رہی ہے
کراچی تاجر اتحاد نے آج کی ہڑتال سے لاتعلقی اور کاروبار کھولنے کا اعلان کیا ہے، آج کی ہڑتال حکومت اور چند تاجروں کی نوراکشتی ہے، ودہولڈنگ ٹیکس کے خلاف تاجر برادری 5اگست کو مکمل شٹرڈائون ہڑتال کرے گی، رات گئے عتیق میر کا ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب، الیکٹرانکس ڈیلرزادریس میمن نے بھی آج ہڑتال نہ کرنے کا اعلان کیا ہے
کراچی( کامرس رپورٹر) وفاقی حکومت کی جانب سے بینک ٹرانزکشن پر ود ہولڈنگ ٹیکس لگائے  جانے کے خلاف تاجر برادری آج ہڑتال کر رہی ہے لیکن تاجروں کی جانب سے ود ہولڈنگ  ٹیکس کے معاملے پر دو گروپ بن جانے کے بعد آج شہر میں آدھی مارکیٹیں کھلی اور آدھی بند ہیں کیونکہ ایک گروپ نے آج کی ہڑتال کا اعلان کیا ہے جبکہ دوسرے گروپ نے آج کی ہڑتال سے لا تعلقی کا اظہار کرتے ہوئے ود ہولڈنگ ٹیکس کے خلاف پانچ اگست کو مکمل پہیہ جام ہڑتال کرنے کا اعلان کیا تھا۔ تفصیلات کے مطابق کراچی میں سندھ تاجر اتحاد، انجمن تاجران اور الیکٹرونکس اینڈ اسمال ٹریڈرز ایسوسی ایشن نے آج ہڑتال کا اعلان کیا ہے اور اس سلسلے میں صدر کی الیکٹرونکس مارکیٹ سمیت دیگر علاقوں میں مکمل شٹر ڈائون ہڑتال کے بینر بھی آویزاں کئے گئے ہیں۔ آج کراچی میں صدر کی الیکٹرونکس مارکیٹ، اولڈ سٹی ایریا میں بولٹن مارکیٹ، کھارا در، صدر بوہری بازار، حیدر مارکیٹ، رضویہ، لانڈھی، کورنگی، ملیر وغیرہ میں آدھی دکانیں کھلی ہوئی اور آدھی بند ہیں جبکہ ٹرانسپورٹرز بھی معمول سے کم تعداد میں چل رہی ہے صدر میں الیکٹرونک مارکیٹس کی اکثر دکانیں بند ہیں آج کی ہڑتال کی کراچی بھر کی تجارتی انجمنوں کے علاوہ لوکل ٹرانسپورٹر سیاسی و مذہبی جماعتوں نے حمایت کی کر دی جن میں صدر رینبو سینٹر کے سلیم میمن، آل پاکستان جیولرز کے محمد ارشد، لانڈھی کورنگی بزنس فورم کے سید راشد علی شاہ، انجمن تاجران بابر مارکیٹ کے شوکت کورنگی نمبر 6 جیولرز کے شجاعت بیگ، کورنگی نمبر2 جیولرز کے نور محمد عباسی، جامع گارمنٹس الائنس کے سلیم راجپوت، فیڈریشن آف دی بزنس یونینز لانڈھی کورنگی کے حاجی فرید داد، آرام باغ الیکٹرونکس کے عبدالرحمن  خان، کراچی اسمال الیکٹرونکس کے رضوان عرفان، بابر مارکیٹ جیولرز کے محمد قاسم، لیاقت آباد تاجران کے حسین قریشی، محمد یاسین، عبدالغنی، گلشن اقبال جیولرز کے نثار خاکسار شیخ، گولیمار سینٹری، بولٹن مارکیٹ، لی مارکیٹ، جوڑیا بازار، نارتھ ناظم آباد، ملیر، شاہ فیصل، بلدیہ اور اورنگی ٹائون، گلبہار اور دیگر انجمنوں کی حمایت کے علاوہ آفرین صدیقی، محمد رفیق ، احمد یحییٰ، انیس قریشی، کاشف صابرانی، ایوب نظامی، محمد فہد، محمد آصف ، صادق تنولی، انیس قریشی، امین صندلی، احمد ضیاء، حبیب احمد خان، محمد خالد انصاری، محمد شفیق ، ندیم خان، عمران وارثی، عبدالغفار قریشی، حاجی عبدالرحمن، گلزار احمد بابو، شوکت علی، ایم اشتیاق مظلوم، ارشاد آفاقی و دیگر نے بھی مکمل حمایت کا اعلان کرتے ہوئے تمام سپورٹرز کا شکریہ ادا کیا ہے۔ کراچی میں اولڈ سٹی ایریا کی تمام مارکیٹوں کا اجلاس ہوا جس کی صدارت رفیق جدون نے کی جس میں متفقہ طور پر اعلان کیا گیا کہ یکم اگست کو اولڈ سٹی ایریا کی تمام مارکیٹیں بند رہیں گی۔ جامع کلاتھ پر سلیم راجپوت کی قیادت میں اجلاس ہوا جس میں جامع کلاتھ کی تمام مارکیٹیں بند کرنے کا اعلان کیا ہے۔ آئی آئی چندریگر روڈ کے تاجروں نے بھی یکم اگست کو کاروبار بند رکھنے کا اعلان کیا ہے۔ اس طرح لیاقت آباد ، کریم آباد، پاپوش نگر، گلشن اقبال، واٹر پمپ، نیو کراچی، طارق روڈ، بہادر آباد، کلفٹن الائنس، کلفٹن ڈیفنس  اسٹیٹ ایجنسی ایسوسی ایشن، جوبلی الائنس مارکیٹیں اور شہر بھر کی تمام چھوٹی بڑی مارکیٹوں کے صدور نے مارکیٹیں بند کرنے کا اعلان کیا ہے، گڈز ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن، آل پاکستان ٹرک ایسوسی ایشن نے بھی ہڑتال میں شمولیت کا فیصلہ کیا ہے۔

 
کراچی( اسٹاف رپورٹر) کراچی تاجر اتحاد نے آج کی تاجروں کی ملک گیر ہڑتال سے لا تعلقی کااظہار کرتے ہوئے کاروبار کھولے رکھنے کی اپیل کی ہے‘ گزشتہ رات گئے کراچی پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے آل کراچی تاجر اتحاد کے چیئرمین عتیق میر نے اعلان کیا کہ کراچی تاجر برادری آج ہڑتال نہیں کریگی تاہم ود ہولڈنگ ٹیکس کے نفاذ کیخلاف پہلے سے اعلان کردہ تاریخ بدھ5 اگست کومکمل شٹر ڈائون ہڑتال کی جائیگی‘ ہم نے آج کی ہڑتال حمایت نہیں کی ہے‘ آج کی ہڑتال حکومت اور چند تاجروں کی نورا کشتی ہے اور یہ ہڑتال وہ لوگ کررہے ہیں جو اعشارئیہ3 فیصد ود ہولڈنگ ٹیکس کے حق میں حکومت کا فیصلہ تسلیم کرچکے ہیں‘ وہ جمعہ کی شب کراچی پریس کلب میں پریس کانفرنس کررہے تھے‘ اس موقع پر انصار بیگ قادری‘ چیئرمین سندھ تاجر اتحاد حبیب شیخ اور ایاز میمن سمیت دیگر تاجر رہنما موجود تھے‘ عتیق میر نے کہا ہے کہ حکومت تاجروں کو مسائل کے گرداب میں پھنسارہی ہے‘علاوہ ازیں رات گئے انجمن تاجران کراچی ایکشن کمیٹی کے چیئرمین اور الیکٹرانکس ڈیلرز کے رہنما محمد ادریس میمن نے بھی ہنگامی اجلاس کے بعد آج ہڑتال میں شریک نہ ہونے کا فیصلہ کیا ہے انہوں نے اعلان کیا کہ ود ہولڈنگ ٹیکس کے معاملے پر الیکٹرانکس ڈیلرز سمیت تمام تاجر پانچ اگست کو ہڑتال کریں گے اور حکومت نے ہمارا مطالبہ تسلیم نہ کیا تو پھر سول نافرمانی شروع کی جائیگی۔

Tags: