متحدہ کے 5 ارکان سندھ اسمبلی کئی ہفتوں سے لاپتہ مختلف افواہیں پھیلنے لگیں

August 3, 2015 5:24 pm0 commentsViews: 20

ارکان اپنے گھر والوں کے دبائو اور گرفتاریوں کے خوف سے ملک سے باہر چلے گئے‘ غیر اعلانیہ طور پر متحدہ سے کنارہ کشی اختیار کرلی ہے
درجنوں پارٹی رہنما اور کارکنان اب پارٹی قیادت سے رابطے میں نہیں ہیں‘ نائن زیرو پر بھی عہدیداروں اور کارکنوں کی آمد کم ہوگئی‘ ذرائع کا دعویٰ
کراچی( نیوز ڈیسک) متحدہ قومی موومنٹ سے تعلق رکھنے والے پانچ اراکین سندھ اسمبلی کئی ہفتوں سے لا پتہ ہیں اور ان کا ایم کیو ایم کے کسی رہنما سے رابطہ نہیں ہے۔ یہ لوگ پارٹی پروگراموں اور اجلاسوں میں کافی عرسے سے نظر نہیں آرہے تھے۔ اس حوالے سے ایم کیو ایم کے ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ ارکان چھٹیوں پر ہیں۔ ذرائع کے مطابق یہ اراکین سندھ اسمبلی اپنے گھر والوں کے دبائو اور گرفتاریوں کے خوف سے ملک سے باہر چلے گئے ہیں جبکہ بعض ذرائع کاکہنا ہے کہ انہوں نے غیر اعلانیہ طور پر ایم کیو ایم سے کنارہ کشی اختیار کر لی ہے۔ ان اراکین اسمبلی میں سرجانی ٹائون سے تعلق رکھنے والے عبداللہ شیخ، گلستان جوہر کے فاروق ارتضیٰ ، فیڈرل بی ایریا کے ایم پی اے خالد بن ولایت، کامران اکبر بلدیہ ٹائون اور عثمان فاروق شامل ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ ایم کیو ایم کی جارحانہ پالیسیوں کے باعث ایم کیو ایم کے رہنمائوں اور کارکنوں کی ایک بڑی تعداد خوفزدہ ہے جس کی وجہ سے درجنوں کی تعداد میں پارٹی رہنما اور کارکنان پارٹی قیادت سے رابطے میں نہیں ہیں۔ انہوں نے احتیاطاً خاموشی اختیار کر لی ہے اور اپنے موبائل فون بھی بند کر رکھے ہیں، ایم کیو ایم کے مرکزنائن زیرو پر بھی پارٹی عہدیداران و کارکنان کی آمد بہت کم ہوگئی ہے۔

Tags: