الطاف کیخلاف پارلیمنٹ میں مذمتی قرارداد پیش ہوگی

August 4, 2015 4:16 pm0 commentsViews: 23

سندھ، پنجاب، خیبرپختونخوا، کشمیر اسمبلیوں میں بھی مذمتی قرار دادیں جمع
آزادکشمیر کے 2وزراء کو ایم کیو ایم سے لاتعلقی یا استعفوں کے لیے 72 گھنٹے کا الٹی میٹم، چوہدری مجید کا 6 اگست کو مظاہروں کا اعلان
کراچی( مانیٹرنگ ڈیسک) الطاف حسین کی نفرت انگیز تقاریر کیخلاف قومی اسمبلی میں متفقہ مذمتی قرار داد لائے جانے کا امکان ہے‘ دوسری طرف الطاف حسین کے بیان پر سندھ‘ پنجاب ‘آزاد کشمیر اسمبلیوں میں مذمتی قرار داد جمع کرادی گئیں جبکہ آج خیبر پختونخوا اسمبلی میں مشترکہ قرار داد پیش کی جائیگی‘ وزیراعظم آزاد کشمیر چوہدری عبدالمجید نے6 اگست کو مظاہروں کا اعلان کردیا جبکہ متحدہ کے دو وزراء کو الطاف حسین سے لا تعلقی یا استعفوں کیلئے72 گھنٹے کا الٹی میٹم دے دیا ہے‘ سندھ اسمبلی میں الطاف حسین کیخلاف قرار داد رکن اسمبلی ثمر علی خان نے جمع کرائی‘ میڈیا سے گفتگو میں ثمر علی خان کا کہنا تھا کہ سیکورٹی اداروں کیخلاف بیانات قابل مذمت ہیں‘ الطاف حسین کے اس عمل سے نہ روکنا وفاقی حکومت کی نا اہلی ہے۔ پنجاب اسمبلی میں قرار داد اپوزیشن لیڈر محمود الرشید کی طرف سے جمع کرائی گئی جس میں الطاف حسین کو انٹرپول کے ذریعے واپس لا کر غداری کا مقدمہ قائم کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے‘ اسمبلی میں قرار داد وزیر خزانہ چوہدری لطیف نے جمع کرائی‘ وزیراعظم آزاد کشمیر چوہدری عبدالمجید نے جمعرات کو الطاف حسین کیخلاف ریلیوں کا اعلان کرتے ہوئے ایم کیو ایم کے وزراء کو اپنے قائد سے اظہار لا تعلقی کرنے یا وزارتوں سے استعفے دینے کیلئے72گھنٹے کا الٹی میٹم دے دیا۔

Tags: