تحریک انصاف کا سیاسی مستقبل مسلم لیگ ن کے ہاتھ میں آگیا

August 5, 2015 5:14 pm0 commentsViews: 19

گزشتہ اگست میں پی ٹی آئی نے پارلیمنٹ کے باہر دھرنا دے کر وزیراعظم سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا تھا
رواں اگست میں تحریک انصاف کے ارکان اسمبلی کو ڈی سیٹ کرنے کا مطالبہ کیاجارہا ہے
ن لیگ کی حکومت پی ٹی آئی ارکان کی اسمبلی رکنیت کو بچانے کے لیے کوشاں ہے
اسلام آباد( نیوز ڈیسک) کہاوت ہے کہ جو دوسروں کیلئے گڑھا کھودتا ہے خود ہی اس میں گرتا ہے ایسی ہی صورتحال کا سامنا اس وقت پاکستان تحریک انصاف کو قومی اسمبلی میں ہے‘ یہ وہی تحریک انصاف ہے جو کہ گزشتہ اگست میں پارلیمنٹ ہائوس کے سامنے دھرنا دیئے بیٹھی تھی اور وزیراعظم نواز شریف سے استعفے کا مطالبہ کیا جارہا تھا اور اب تحریک انصاف کے ارکان اسمبلی کو ڈی سیٹ کرنے کا مطالبہ کیا جارہا ہے اور تحریک انصاف کا سیاسی مستقبل مسلم لیگ (ن) کی حکومت کے ہاتھ میں ہے جو کہ ان کے استعفوں کو نامنظور کروانے اور انہیں پارلیمنٹ میں رکھنے کیلئے پوری طرح ان کے ساتھ کھڑی ہے‘ منگل کو قومی اسمبلی کے ایوان میں تحریک انصاف کے وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی اور ان کی جماعتوں کے دیگر اراکین حکومت اور اپوزیشن جماعتوں کے اراکین کی تقاریر سر جھکائے سن رہے تھے جے یو آئی (ف) کے امیر مولانا فضل الرحمن اور ایم کیو ایم کے فاروق ستار اور رشید گوڈیل ان کو آڑے ہاتھوں لے رہے تھے جبکہ اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کی کوشش تھی کہ تحریک انصاف کو ڈی سیٹ کرنے کی نوبت نہ آئے جبکہ حکومت کی جانب سے وفاقی وزیر برائے ریلوے خواجہ سعد رفیق خاصے متحرک نظر آئے وہ بھی تحریک انصاف کو بچانا چاہتے ہیں اس لئے ان کیخلاف ووٹنگ نہیں چاہتے اس حکومتی تیزی پر فاروق ستار کا کہنا تھا کہ یہاں مدعی چست گواہ سست والا حساب ہے۔

Tags: