آج صبح،جنجال گوٹھ سے خاتون اور مرد کی لاشیں برآمد

August 6, 2015 4:04 pm0 commentsViews: 35

نامعلوم ملزمان نے اغواء کے بعد تشدد کا نشانہ بنایا اور بعد میں کلہاڑیوں کے وار کرکے قتل کردیا
مقتولین کی شناخت ان کی جیب سے ملنے والے قومی شناختی کارڈ سے کی گئی، نیشنل بائی پاس کے گوٹھ کے رہائشی ہیں
کراچی( کرائم رپورٹر) صبح سویرے سپر ہائی وے جنجال گوٹھ سے مرد اور خاتون کی تشدد زدہ لاشیں ملیں۔ تفصیلات کے مطابق آج صبح سہراب گوٹھ کے علاقے سپر ہائی وے جنجال گوٹھ اختر شیر کانٹے کے قریب سے2 لاشیں مرد اور خاتون کی ملیں۔ جس کی اطلاع پولیس کو دی گئی۔ پولیس نے موقع پر پہنچ کر لاشوں کو اپنی تحویل میں لے کر ضابطے کی کارروائی کیلئے عباسی شہید اسپتال منتقل کیا۔ جہاں مقتولین کی شناخت30 سالہ شاہد خان ولد انوار خان اور 25 سالہ بلقیس دختر حبیب خان کے نام سے ہوئی ہے۔ مقتولین جیسم بنور گوٹھ نیشنل ہائی وے کے رہائشی بتائے جاتے ہیں۔ پولیس نے بتایا کہ مقتولین کو نا معلوم ملزمان اغواء کے بعد بد ترین تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد کلہاڑیوں کے پے درپے وار کرکے قتل کیا اور فرار ہوگئے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ شبہ ہے کہ مقتولین کو کسی اور مقام پر قتل کرنے کے بعد لاشیں مذکورہ مقام پر پھینکی ہیں۔ پولیس نے مزید بتایا کہ مقتولین کی شناخت ان کی جیب سے ملنے والے قومی شناختی کارڈ سے کی گئی ہے۔ اور مقتولین کے ورثاء کا ابھی تک رابطہ نہیں ہو سکا اور شبہ ہے کہ مذکورہ قتل کاروکاری یا پسند کی شادی کی وجہ سے ہوئے ہیں۔ جب تک مقتولین کے ورثاء سامنے نہیں آتے ان کے قتل کی وجہ معلوم نہیں ہو سکے گی۔ پولیس ضابطے کی کارروائی کے بعد لاش ورثاء کے حوالے کرنے کیلئے ایدھی ہوم منتقل کر دی گئی ہے۔ پولیس واقعے کی مزید تفتیش کر رہی ہے۔

Tags: