لیاری گینگ وار کا سرغنہ بابا لاڈلہ بلوچستان میں مارا گیا؟

August 7, 2015 4:48 pm0 commentsViews: 24

ایرانی بارڈر کے قریب سیکورٹی فورسز اور گینگ وار ملزمان میں فائرنگ کا تبادلہ ہوا تھا
بابا لاڈلہ فائرنگ کے تبادلے میں مارا گیا، سرکاری طور پر ہلاکت کی تصدیق نہیں کی گئی
لیاری اور مواچھ گوٹھ میں بابا لاڈلہ کے ساتھی پریشان ہونے کے بجائے مطمئن نظر آتے ہیں
بابا لاڈلہ زندہ اور عمان میں موجود ہے، پہلے بھی ہلاکت کی خبر چل چکی ہے، ذرائع
کراچی( مانیٹرنگ ڈیسک) لیاری گینگ وار کا سر غنہ نور محمد بلوچ عرف بابا لاڈلہ بلوچستان میں مارا گیا۔ نجی ٹی وی کے مطابق ایرانی بارڈر کے قریب سیکورٹی اداروں اور گینگ وار ملزموں میں فائرنگ کا تبادلہ ہوا جس کے نتیجے میں گینگ وار سرغنہ بابا لاڈلہ ہلاک ہوگیا۔ بلوچستان حکومت نے بابا لاڈلہ کی ہلاکت کی سرکاری طور پر تصدیق نہیں کی۔ اس سے قبل بھی بابا لاڈلہ کی ہلاکت کی خبر آتی رہی ہیں، بابا لاڈلہ 100 سے زائد وارداتوں میں ملوث تھا جبکہ اس کے سر کی قیمت25 لاکھ روپے مقرر تھی، دوسری جانب بابا لاڈلہ کی مبینہ مقابلے میں ہلاکت کی اطلاع پر لیاری سمیت ملیر، مواچھ گوٹھ، میں بے چینی پھیل گئی۔ تاہم کچھ دیر بعد معنی خیز انداز میں خاموشی چھا گئی اور اس کے ساتھی و اہلخانہ مطمئن انداز میں رہے۔ ذرائع کے مطابق بابا لاڈلہ سے رابطہ کیا اور رابطہ ہونے پر وہ مطمئن ہوگئے۔ ذرائع کے مطابق بابا لاڈلہ عمان میں موجود ہے۔ وہ ایران بھی آتا جاتا رہتا ہے۔ واضح رہے کہ تقریباً ایک سال قبل بھی اسی طرح ایران بارڈر پر بابا لاڈلہ اور غفار ذکری کی ہلاکت کی اطلاع ملی تھی۔ ایک ذرائع کا کہنا ہے کہ ایک سال قبل بابا لاڈلہ کی ہلاکت کی اطلاع کے بعد بابا لاڈلہ کسی کے رابطے میں نہیں آیا نہ ہی اسے کسی نے لیاری میں دیکھا اور نہ ہی ایران، مسقط اور دبئی میں دیکھا گیا ہے۔ بابا لاڈلہ زندہ ہے یا مر چکا ہے اس کی اب تک تصدیق نہیں ہو سکی ۔ ایک اور ذرائع نے یہ بھی بتایا کہ موجودہ ہلاکت کا واقعہ 2 روز قبل پیش آیا۔ بابالاڈلہ کو سیکورٹی فورسز نے نہیں بلکہ بلوچستان کے ایک انتہا پسند گروپ نے نشانہ بنایا ہے۔

Tags: