بیرونی فنڈنگ رک جائے تو دہشت گردی خود ہی ختم ہو جائیگی، سپریم کورٹ

August 7, 2015 5:57 pm0 commentsViews: 25

وفاق اور صوبے لا اینڈ جسٹس کمیشن کے پرو فارما کے مطابق ملک میں کام کرنے والی این جی ا وز سے متعلق معلومات فراہم کریں
پنجاب میں47 ہزار403، سندھ میں6 ہزار 150، خیبر پختونخوا میں10 ہزار اور بلوچستان میں1800 این جی اوز رجسٹرڈ ہیں،حکام
اسلام آباد( نیوز ڈیسک) سپریم کورٹ نے ملک میں کام کرنیوالی این جی اوز کی رجسٹریشن‘ فنڈنگ اور کام کے طریقہ کار سے متعلق بنیادی معلومات طلب کرلی ہیں‘ عدالت نے وفاقی اور صوبوں کو ہدایت کی ہے کہ لاء اینڈ جسٹس کمیشن کی جانب سے بنائے جانیوالے پروفارما کے مطابق بنیادی معلومات اور اعداد و شمار پیش کئے جائیں ۔عدالت نے کیس کی مزید سماعت 20 اگست تک ملتوی کردی۔ جسٹس جواد ایس خواجہ کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے این جی اوز کی رجسٹریشن سے متعلق کیس کی سماعت کی تو وفاقی اور صوبوں کی جانب سے رپورٹس پیش کی گئیں‘ لاء اینڈ جسٹس کمیشن کے سیکریٹری نے عدالت کو بتایا کہ لائحہ عمل کے مطابق وزارت داخلہ نے متعلقہ معلومات مہیا نہیں کی ہیں‘ بیس لائن ڈیٹا اکٹھا نہیں ہورہا ہے‘ جسٹس جواد ایس خواجہ نے ریمارکس دیئے کہ غیر ملکی فنڈنگ دہشت گردوں کیلئے آکسیجن ہے‘ اگر بیرونی فنڈنگ روک دی جائے تو دہشت گرد اپنی موت آپ مرجائیں گے۔ نیشنل ایکشن پلان کے تحت بیرونی فنڈنگ بند ہوجانی چاہئے‘ اس سلسلے میں حکومتیں کام نہیں کررہیں‘ لاء اینڈ جسٹس کمیشن کے سیکریٹری نے عدالت کو بتایا کہ انہوں نے عدالت کے حکم پر متعلقہ فارم تیار کرلیا ہے۔ جسٹس جواد خواجہ نے ریمارکس دیئے کہ اتنے بڑے دعوے کئے جارہے ہیں کہ فلاں فلاں کام کرلئے لیکن وزارت داخلہ ابھی تک بنیادی معلومات فراہم نہیں کرسکی حکام نے بتایا کہ پنجاب میں47 ہزار403‘ سندھ میں6 ہزار 150 ‘خیبر پختونخوا میں10ہزار این جی اوز رجسٹرڈ ہیں جبکہ بلوچستان میں1800 رجسٹرڈ اور 2500 غیر رجسٹرڈ ہیں۔ 63بین الاقوامی این جی اوز کے بارے میں مکمل معلومات جمع کی جاچکی ہیں۔

Tags: