ڈپٹی کمشنر کی مبینہ سرپرستی میں منافع خور عوام کو لوٹنے لگے

August 7, 2015 6:05 pm0 commentsViews: 32

ضلعی انتظامیہ کی ملی بھگت سے غیرقانونی بچت بازار اور چارجڈ پارکنگ کا دھندہ بھی جاری
کمشنر و ایڈمنسٹریٹر کراچی نے صورتحال بہتر کرنے کے بجائے اداروں میں تنازعات کھڑ کردیے
کراچی(سٹی رپورٹر) ایڈمنسٹریٹر بلدیہ عظمیٰ کراچی شہریوں کو میونسپل سروسز سمیت دیگر بلدیاتی سہولیات فراہم کر نے میں مکمل طور پر ناکام،قائم مقام ایڈمنسٹریٹرکے ایم سی گذشتہ دوسال سے کمشنر کراچی کے عہدے پر تعینات ہیں بیک وقت شہر کے دو اہم ترین عہدوںپر تعینات ہونے کے باوجود شعیب صدیقی عملی طور پر شہریوں کو درپیش مسائل حل کرنے میں ناکام ہوچکے ہیں شہر میں مصنوئی مہنگائی عروج پر ہے ذرائع کے مطابق ڈپٹی کمشنرز اسسٹنٹ کمشنرزکی مبینہ سرپرستی میں منافع خور بلا خوف معصوم شہریوں کو دونوں ہاتھوں سے لوٹ رہے ہیںجبکہ ضلعی انتظامیہ کے افسران کی مبینہ ملی بھگت سے شہر میں بڑے پیمانے پر غیر قانونی بچت بازار چارجڈ پارکنگ اور پتھاروںکے ساتھ ساتھ شہر کی قیمتی زمین پر مبینہ طور پر قبضے کرواکر جعلی لیز کرنے میں ملوث ہیں۔ شہر میں غیر قانونی بازار،شہر کی سڑکوں فٹ پاتھوں پر سرکاری سرپرستی میں تجاوزات اور پتھارے تاحال قابض ہیںجس کے سدباب کے لئے ایڈمنسٹریٹر کراچی نے کوئی تاحال کوئی اقدامات نہیں کیے جبکہ دیگر سرکاری اداروںکے کاموں میں مداخلت کے ساتھ ساتھ ایف آئی آر کاٹنے کے احکامات جاری کر کے کمشنر و ایڈ منسٹریٹر نے اداروں کے درمیان تنازعات کھڑے کر دیئے ہیں جس کا خمیازہ معصوم شہریوں کو بھگتنا پڑے گا۔

Tags: