نواز دور حکومت میں غربت کی شرح40 فیصد بڑھ گئی

August 8, 2015 4:43 pm0 commentsViews: 41

مہنگائی کی شرح میں20 فیصد اضافہ ہو گیا، غریب اور متوسط طبقے کی زندگی اجیرن ہو گئی
دنیا بھر میں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں کم مگر پاکستان میں اس پر ٹیکس کی شرح بڑھ گئی
کراچی( نیوز ڈیسک) نواز حکومت کا ابتدائی2سالہ دور حکومت غریب و متوسط طبقے کیلئے ہوش اڑا دینے والا ڈرائونا خواب ثابت ہوا ہے۔ 2 برسوں کے دوران مہنگائی کی شرح میں 15 سے20فیصد اضافہ ہوا، اشیاء خوردو نوش کی قیمتیں آسمان سے باتیں کر رہی ہیں جب کہ غربت کی شرح 35 سے40 فیصد تک پہنچ گئی ہے۔ موجودہ وفاقی حکومت نے2013-14 اور2015ء میں3 بجٹ پیش کئے تاہم اس دوران سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں صرف ساڑھے 32 فیصد اضافہ کیا گیا۔ حکومتGDP کی شرح میں بھی 4فیصد سے زیادہ اضافہ کرنے میں ناکام رہی جس کا اثر غریب اور متوسط طبقے کے معیار زندگی پر پڑنے سے ان کی زندگی اجیرن ہوگئی ہے۔ دنیا میں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں فی بیرل58 ڈالر کی کمی واقع ہوئی لیکن پاکستان میں عوام تک اس کے اثرات پہنچانے کے بجائے پیٹرولیم مصنوعات پر ٹیکس کی شرح میں اضافہ کر دیا گیا۔ اس تمام صورتحال کا عام آدمی کی ضروریات زندگی پر منفی اثر پڑا ہے۔ آٹا، دالیں، مصالحے، خشک میوے، گوشت، پھلوں، سبزیوں کی قیمتوں میں2تا130 روپے تک اضافہ ہوا۔ سروے کے مطابق نواز شریف کے2 سالہ دور حکومت میں ملکی تاریخ میں پہلی بار 2013-14 میں آلو جس کی پیداوار سالانہ لاکھوں ٹن ہے، 120 روپے فی کلو فروخت ہوا ہے جب کہ ٹماٹر بھی120 روپے فی کلو تک میں فروخت کیا گیا۔

Tags: