سندھ میں بڑے سیلاب کا کوئی خطرہ نہیں ہے، وزیر آبپاشی

August 8, 2015 5:04 pm0 commentsViews: 25

صوبے میں حفاظتی بندوں پر 45 مقامات کو انتہائی حساس قرار دیا گیا تھا، نثار کھوڑو کی اسمبلی میں تقریر
کراچی( اسٹاف رپورٹر) وزیر اطلاعات و آبپاشی سندھ نثار احمد کھوڑو نے کہا کہ سندھ میں بڑے سیلاب کا کوئی خطرہ نہیں ہے اگست کے مہینے میں صوبے کے بیراجوں سے 6 لاکھ سے7لاکھ کیوسک پانی کا بہائو ہوگا۔ 2010ء کی طرح کا سیلاب نہیں ہے۔ کچے کے علاقے میں لوگوں کو پریشانی ہوئی ہے اور نقل مکانی بھی ہوئی ہے۔ پانی کے اس بہائو سے ہم آسانی سے نمٹ لیں گے۔ جمعہ کو سندھ اسمبلی کے اجلاس میں مسلم لیگ فنکشنل کی خاتون رکن نصرت سحر عباسی کے توجہ دلائو نوٹس پر نثار کھوڑو نے کہا کہ سندھ میں حفاظتی بندوں پر 45 مقامات کو حساس قرار دیا گیا تھا۔ 18 مقامات پر پانی کا دبائو پڑا لیکن وہاں بر وقت کام کرکے صورتحال کو سنبھال لیا ہے۔ خطرے کی کوئی بات نہیں ہے۔ نثار کھوڑو نے بتایا کہ توڑی بند پر ڈیڑھ ارب روپے کی لاگت سے ایک اسکیم پر گزشتہ مئی سے کام شروع ہو چکا ہے اور یہ اسکیم رواں سال دسمبر میں مکمل ہوجائے گی۔ جبکہ دیگر بندوں پر بھی کام ہو رہا ہے۔

Tags: