متحدہ کا اسمبلیوں سے مستعفی ہونے کا فیصلہ

August 12, 2015 2:06 pm0 commentsViews: 20

کراچی میں ایم کیو ایم کے خلاف جاری ٹارگٹڈ آپریشن، رہنمائوں کی بلاجواز گرفتاریوں اور الطاف حسین کے خلاف اسمبلیوں میں قراردادیں منظور ہونے پر احتجاجاً سندھ ،قومی اسمبلی اور سینیٹ سے استعفے دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے
الطاف حسین نے استعفوں سے متعلق رابطہ کمیٹی کے فیصلے کی توثیق کردی، مہاجروں کو دیوار سے لگانے کی کوشش کی جارہی ہے، ہماری آواز کوئی نہیں سن رہا، استعفے دینے کے علاوہ کوئی راستہ باقی نہیں ہے، متحدہ رہنما
کراچی( مانیٹرنگ ڈیسک) متحدہ قومی موومنٹ نے قومی اسمبلی ‘ سینیٹ اور سندھ اسمبلی سے احتجاجاً مستعفی ہونے کا فیصلہ کرلیا‘ متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین نے رابطہ کمیٹی کے فیصلے کی توثیق کردی ہے۔ تفصیلات کے مطابق کراچی میں جاری آپریشن‘ ایم کیو ایم کے رہنمائوں اور کارکنوں کی بلا جواز گرفتاریوں ‘کارکنوں کے ماورائے عدالت قتل‘ فطرہ اور چندہ مانگنے پر پابندی‘ نائن زیرو پر چھاپوں‘ سندھ اسمبلی اور قومی اسمبلی سمیت دیگر صوبوں میں الطاف حسین کیخلاف قرار دادیں پاس کرنے کیخلاف متحدہ قومی موومنٹ نے مرحلہ وار قومی اسمبلی‘ سندھ اسمبلی اورسینیٹ سے مستعفی ہونے کا فیصلہ کرلیا جس کی توثیق الطاف حسین نے کردی ایم کیو ایم کے رہنمائوں کا کہنا ہے کہ کراچی آپریشن میں صرف ایم کیو ایم کو ٹارگٹ بنایاگیا اور ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے جبکہ ایم کیو ایم کے رہنمائوں اور کارکنوں کو بے جا گرفتار کیا جارہا ہے‘ کارکنوںکی ٹارگٹ کلنگ اور ماورائے عدالت قتل کیا جارہا ہے‘نائن زیرو پر رینجرز نے چھاپے مارے جو غیر قانونی ہے‘ ہمیں عید الفطر پر فطرہ اور چندہ مانگنے سے روک دیا گیا درجنوں کارکنوں کو بے جا گرفتار کیا گیا‘ پارلیمنٹ میں متحدہ قومی موومنٹ کی آواز کو دبایا گیا‘ آزاد کشمیر حکومت نے متحدہ قومی موومنٹ کے2 ارکان کو جبراً برطرف کرکیا گیا‘ ان کا کہنا ہے کہ مہاجروں کو دیوار سے لگانے کی کوشش کی جارہی ہے‘ حالانکہ ہمارے آبائو اجداد نے پاکستان کیلئے قربانیاں دیںہمارے رہنمائوں کی آواز کہیں نہیں سنی جارہی اس لئے اسمبلیوں سے استعفے دینے کے سوا کوئی راستہ نہیں ہے‘ پہلے مرحلے میں قومی اسمبلی اور اس کے بعد سندھ اسمبلی اور سینیٹ سے استعفے دیئے جائیں گے‘ نجی ٹی وی کے مطابق امکان ہے کہ متحدہ قومی موومنٹ کے ارکان قومی اسمبلی آج اپنے استعفے اسپیکر کو پیش کردیں گے۔ذرائع کے مطابق رات گئے ایم کیو ایم کی رابطہ کمیٹیوں کا کراچی اور لندن میں ہنگامی اجلاس منعقد ہوا جس میں کراچی میں رینجرز کی جانب سے جاری آپریشن پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے قومی اسمبلی سے مستفی ہونے کا فیصلہ کیا گیا۔ ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین نے بھی رابطہ کمیٹیوں کے فیصلے کی توثیق کرتے ہوئے کہا کہ کسی فورم پر شنوائی نہیں ہو رہی، اسمبلیوں اور عدالتوں میں کچھ بھی نہیں بولا جا رہا لہذا ایسی صورت حال میں ہمارے پاس استعفوں کے سوا کوئی چارہ نہیں۔ذرئع کے مطابق ایم کیو ایم کے اراکین نے استعفے فاروق ستار کے پاس جمع کرادیئے آج قومی اسمبلی میں استعفے پیش کئے جانے کا امکان ہے۔

Tags: