اضافی بلنگ میں ملوث کے الیکٹرک افسران کیخلاف کارروائی کی تیاری

August 12, 2015 2:21 pm0 commentsViews: 39

کے الیکٹراک کی انتظامیہ نے بجلی کی پیداوار اور ترسیل کے شعبے کے سربراہ کو ہٹا کر امریکی شہری کو15 لاکھ روپے ماہانہ پر تعینات کر دیا
انتظامیہ تبدیلی کے باوجود لوڈشیڈنگ اور اضافی بلنگ جاری، بوگس بل کے متاثرین کو رقم اقساط میں دینے کی ہدایت کر دی جاتی ہے
کراچی( نیوز ڈیسک) بجلی صارفین سے اضافی بل کی وصولی میں ملوث اعلیٰ افسران کے خلاف کارروائی کیلئے نیپرا نے کے الیکٹرک کے گرد گھیرا مزید تنگ کر دیا ہے جس کے نتیجے میں کے الیکٹرک انتظامیہ کی پیداوار اور ترسیل کے شعبے کے سربراہ ارشد زاہدی کو عہدے سے ہٹا دیا اور ان کی جگہ امریکی شہری ڈیل سنکلیئر کو15 لاکھ روپے ماہانہ پر نیا سربراہ مقرر کیا ہے تاہم انتظامی امور میں اہم تبدیلی کے باوجود شہر میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ اور شہریوں سے اضافی بلنگ کے ذریعے لوٹ مار بند نہیں ہو سکی۔ ذرائع نے بتایا کہ ارشد زاہدی 2008ء سے کے الیکٹرک سے وابستہ تھے لیکن توانائی کے شعبے میں انجینئر نگ کی سند اور پاکستان انجینئرنگ کونسل ( پی ای سی ) میں رجسٹرڈ نہ ہونے کی وجہ سے ان کی تقرری متنازعہ رہی ہے۔ ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ کے الیکٹرک حکام پر بجلی صارفین سے اضافی بل کی وصولی میں ملوث سابق چیف ایگزیکٹیو آفیسر تابش گوہر سمیت15 اعلیٰ افسران کے خلاف کارروائی کے لئے نیپرا کا شدید دبائو ہے۔ چیف جنریشن اور ٹرانسمیشن آفیسر ارشد زاہدی کو عہدے سے ہٹا نا بھی اسی دبائو کا نتیجہ ہے اور آئندہ چند روز میں مزید افسران کو تبدیل کئے جانے کا امکان ہے۔ ذرائع کے مطابق بوگس بل کے متاثرہ صارفین کی شکایات کا ازالہ کرنے کے بجائے انہیں ماہانہ اقساط میں بل ادا کرنے کی ہدایت کر دی جاتی ہے۔ کے الیکٹرک انتظامیہ نے 20, 19 ستمبر2012ء میں ریجن کے تمام افسران کو اس وقت کے ڈپٹی جنرل منیجر ڈسٹری بیوشن فنانس محمد شعیب صدیقی کے توسط سے ای میل جاری کرتے ہوئے ہدایت کی تھی کہ تمام افسران اپنے اپنے علاقوں میں ہر صارف پر ماہانہ بل میں50 یونٹس اضافی لگا کر ماہانہ ریونیو کے ٹارگٹ کو پورا کریں بلکہ اضافی یونٹس سے ریونیو کو مزید بڑھایاجائے نیز اس فارمولے پر عمل کرتے ہوئے دیگر ریجن کے افسران کو بھی ماہانہ ریونیو بڑھانے کی ہدایت کی تھی لیکن کچھ شہریوں کی شکایات پر نیپرا کی3 رکنی کمیٹی نے تحقیقات کا آغاز کیا تھا۔

Tags: