سندھ میں دوہری شہریت والے بلدیاتی الیکشن لڑ سکیں گے

August 13, 2015 3:07 pm0 commentsViews: 23

اسمبلی میں قانون منظور، پانی چوروں اور واٹربورڈ کی زمینوں پر قبضہ کرنے والوں کے لیے سزا مقرر
چانڈکاڈینٹل میڈیکل کالج کا نام تبدیل کرکے آصفہ بی بی کالج رکھ دیا گیا
کراچی( اسٹاف رپورٹر) سندھ اسمبلی نے بدھ کو پانچ مسودہ ہائے قانون (بلز) کی اتفاق رائے سے منظور ی دے دی ہے ۔ایک بل کے تحت دوہری شہریت رکھنے والوں کو بلدیاتی انتخابات میں حصہ لینے کی اجازت دے دی گئی ہے۔ جبکہ دوسرے بل کے تحت کراچی میں پانی چوری ،غیر قانونی کنکشن اور واٹربورڈ کی زمین پر قبضہ کرنے والوں کے لیے سزا مقرر کی گئی ہے ۔جبکہ ایک تیسرے بل کے تحت چانڈکا ڈینٹل کالج لاڑکانہ کا نام تبدیل کرکے ’’بی بی آصفہ ڈینٹل کالج لاڑکانہ‘‘ رکھ دیا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق سندھ اسمبلی نے بدھ کو سندھ لوکل گورنمنٹ (تیسرا ترمیمی) بل 2015 اتفاق رائے سے منظور کرلیا ،جس کے تحت بلدیاتی انتخابات میں حصہ لینے والے امیدواروں کے لیے دوہری شہریت کی پابندی ختم کردی گئی ہے ۔اب دوہری شہریت والے بھی انتخابات میں حصہ لے سکیں گے۔بل کے تحت یونین کونسل/ یونین کمیٹی میں خواتین ارکان کی تعداد ایک سے دو کردی گئی ہے جبکہ دیگر مقامی کونسلز میں خواتین کی نمائندگی22 فیصد سے بڑھ کر33 فیصد کردی گئی ہے ۔سندھ اسمبلی نے کراچی واٹر اینڈ سیوریج بورڈ ( ترمیمی) آرڈیننس 2015 کی اتفاق رائے سے منظوری دے دی جس کے تحت پانی چوروں غیر قانونی کنکشن لگانے اور واٹر بورڈ کی زمین پر قبضہ کرنے والوں کو سخت سزا دی جائے گی۔ سزا دس سال تک قید یا دس لاکھ روپے جرمانہ یا دونوں سزائیں کی جا سکیں گی۔

Tags: