لیاری میں رینجرز نے گینگ وار کارندہ مقابلے میں مار ڈالا بھتہ نہ ملنے پرزیرتعمیر فلیٹس پر دستی بم سے حملہ

August 13, 2015 3:11 pm0 commentsViews: 29

رینجرز نے علی محمد محلہ میں ٹارگٹڈ آپریشن شروع کیا تو مورچہ بند ملزمان نے اندھا دھاند گولیاں برسا دیں
جوابی فائرنگ میں ایک کارندہ مارا گیا جس کا تعلق غفار ذکری سے ہے، ساتھی فرار ہوگئے
جھٹ پٹ مارکیٹ کے قریب دستی بم حملے میں راہگیر زخمی، بلڈر کوبھتے کی پرچی دی گئی تھی، پولیس
کراچی ( کرائم ڈیسک) لیاری میں رینجرز سے مبینہ مقابلے کے دوران لیاری گینگ غفار ذکری گروپ کا کارندہ شاہجہاں لاشاری مارا گیا۔ جبکہ جھٹ پٹ مارکیٹ میں بھتہ نہ دینے پر گینگ وار کارندوں نے زیر تعمیر فلیٹس کے سامنے دستی بم پھینک دیا تفصیلات کے مطابق بدھ کو کلری کے علاقے علی محمد محلہ میں گینگسٹرز کی موجودگی پر رینجرز نے ٹارگٹڈ آپریشن کیا تو مسلح ملزمان نے مورچوں سے رینجرز اہلکاروں پر اندھا دھند فائرنگ شروع کر دی اور موقع سے فرار ہونے لگے۔ رینجرز اہلکاروں کی جوابی فائرنگ سے ایک کارندہ ہلاک ہوگیا جبکہ اس کے دو ساتھی موقع سے فرار ہوگئے۔ ہلاک کارندے سے اسلحہ بھی ملا ہے۔ لاش کو قانونی کارروائی کیلئے سول اسپتال منتقل کیا گیا جہاں دہشت گرد کی شناخت شاہجہاں لاشاری کے نام سے ہوئی۔ رینجرز ترجمان کا کہنا ہے کہ ملزم اقدام قتل، اغواء برائے تاوان، بھتہ خوری سمیت مختلف نوعیت کے کیسوں میں ملوث اور مطلوب تھا۔ پولیس نے کارروائی کے بعد لاش ورثاء کے حوالے کر دی۔ کلا کوٹ کے علاقے جھٹ پٹ مارکیٹ کے قریب زیر تعمیر فلیٹس کے سامنے موٹر سائیکل سوار نا معلوم ملزمان دستی بم پھینک کر فرار ہوگئے جو کہ خوفناک دھماکے سے پھٹ گیا۔ اور علاقے میں خوف و ہراس پھیل گیا، حملے میں ایک راہگیر 17 سالہ محمد ارشد زخمی ہوگیا۔ جسے طبی امداد کیلئے سول اسپتال پہنچایا گیا۔ ایس ایچ او کلا کوٹ شاہجہاں لاشاری کا کہنا ہے کہ دستی بم کے حملے میں گینگ وار کا گروپ ملوث ہے اور اس گروپ نے بھتے کی رقم کیلئے مقامی بلڈر کو ڈرانے کے لئے اس کی زیر تعمیر رہائشی منصوبے پر دستی بم کا حملہ کیا ہے۔

Tags: