اسکول وینوں میں نصب سلنڈروں کیخلاف کارروائی21 اگست سے ہوگی

August 13, 2015 3:47 pm0 commentsViews: 23

شہر میں18 ہزار سے زائد اسکول وینوں کا ڈیٹا بھی مرتب کیا جا رہا ہے، ڈی آئی جی ٹریفک
کراچی (اسٹاف رپورٹر)ڈی آئی جی ٹریفک امیر احمد شیخ نے کہا ہے کہ اسکول وینز کے ڈرائیورز بچوں کے تحفظ اور ان کی عزت نفس کا خیال رکھیں ۔شہر میں 18ہزار سے زائد اسکول وینوں کا ڈیٹا بھی مرتب کیا جارہا ہے ۔والدین ڈرائیورز کی جانب سے غیر ذمہ دارانہ رویے کی شناخت سٹیزن پولیس کو کریں ۔یہ بات انہوں نے بدھ کو گارڈن میں پریس کانفرنس کے دوران کہی ۔انہوںنے کہا کہ ٹریفک پولیس کے سامنے دو بڑے مسائل ہیں ،جن میں ایک اسکول کے بچوں کا تحفظ کو یقینی بنانا اور دوسرا شہر میں رکشہ اور ٹیکسی کے کرایے کے نظام وضع کرنا ہے ۔اس ضمن میں اسکولوں کی انتظامیہ کی ایسوسی ایشن اور ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن سے مذاکرات جاری ہیں ۔اسکول وینوں کے ڈرائیورز کے لیے کچھ شرائط رکھی گئی ہیں جس پر عمل درآمد کرنا لازمی ہوگا ۔اسکول وین کا رنگ پیلا رکھا جائے اور اسکول وین پر بورڈ کو آویزاں کیا جائے ۔وین کے ساتھ بچوں کو باحفاظت اتارنے اور چڑھانے کے لیے ایک ہیلپر کا ہونا بھی لازمی ہے ۔اسکول وین میں سی این جی اور ایل پی جی سلنڈرز نصب نہ کیے جائیں جبکہ شہر میں موجود 18ہزار سے زائد اسکول وینز کی رجسٹریشن کی جائے گی اور ان کا ریکارڈ سی پی ایل سی میں مرتب کیا جارہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ اسکول انتظامیہ اور کالجز میں استعمال ہونے والی گاڑیوں کی رجسٹریشن ایک ماہ میں کروالی جائے ۔اسکولوں کی سطح پر کام کرنے والی گاڑیوں میں نصب سلنڈر کی جانچ کے لیے کارروائی کا آغاز 21اگست سے کردیا جائے گا ۔

Tags: