سرچ آپریشن کیخلاف زمان ٹائون تھانے کا گھیرائو

August 14, 2015 3:17 pm0 commentsViews: 19

مشتعل خواتین کا گرفتار افراد کی رہائی کا مطالبہ، پولیس نے چادر چار دیواری کا تقدس پامال کیا، علاقہ مکین
پولیس نے بے گناہ افراد کی رہائی کے بدلے بھاری رشوت طلب کرلی، مقدمات میں ملوث کرنیکی دھمکیاں دی جارہی ہیں، مظاہرین
کراچی( اسٹاف رپورٹر) کورنگی پولیس کی بھاری نفری کی جانب سے بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب سرچ آپریشن کے دوران حراست میں لئے گئے39 سے زائد افراد کے مشتعل اہل خانہ اور علاقہ مکینوں نے تھانے کا گھیرائو کرکے پولیس کیخلاف احتجاج کیا اور زیر حراست افراد کی رہائی کا مطالبہ کیا‘ جمعرات کی صبح زمان ٹائون تھانے کے باہر خواتین کی بڑی تعداد موجود تھی جن کا کہنا تھا کہ ہم لوگ اپنے گھروں میں سورہے تھے کہ پولیس کی بھاری نفری علاقے میں داخل ہوئی دیوار کو پھلانگ کر گھر میں سوئے ہوئے بھائی ‘والد اور شوہر کو حراست میں لے کر تھانے لے آئے‘ کچھ مشتعل افراد کا کہنا تھا کہ حراست میںلئے جانے والے کچھ افراد کو رات میں ہی رہا کردیا گیا تھا‘کسی قسم کا کوئی اسلحہ نہیں ملا‘ کچھ مشتعل افراد کا کہنا تھا کہ پولیس اہلکار رہائی کیلئے فی شخص 20سے25 ہزار روپے مانگ رہے ہیں اور رقم نہ دینے پر مختلف مقدمات درج کرنے کی دھمکیاں دے رہے ہیں‘ ایس ایچ او راجہ طارق کا کہنا ہے کہ حراست میں لئے جانیوالے افراد میں سے17 افراد کو فارن ایکٹ کے تحت گرفتار کیا جبکہ اقبال نامی شخص کے پاس سے غیر قانونی اسلحہ ملا ہے زیر حراست افراد کی پولیس اہلکاروں کے قتل کے واقعے میں زخمی ہونیوالے افراد سے شناخت کرائی جارہی ہے جس کے بعد ان کو رہا کردیا جائیگا۔

Tags: