کراچی میں جرائم پیشہ عناصر کو مسلط کرنے کی کوشش کی جارہی ہے، الطاف حسین

August 15, 2015 3:50 pm0 commentsViews: 32

گورنر سندھ نے مہاجر قوم کی حفاطت کیلئے اٹھائے گئے حلف کی پاسداری نہیں کی، مجھے انٹرپول سے ڈرانے والے بے وقوف ہیں
وفاقی حکومت مائنس الطاف حسین چاہتی ہے، جدوجہد جاری رکھوں گا، جشن آزادی کے موقع پر تقریب سے خطاب
کراچی( اسٹاف رپورٹر) متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین نے کہا ہے کہ آج ایک بار پھر جرائم پیشہ عناصر کو شہر کے مختلف علاقوں میں عوام پر مسلط کئے جانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد خان نے مہاجر قوم کی حفاظت کے لئے اٹھائے گئے حلف کی پاسداری نہیں کی۔ وفاقی حکومت مائنس الطاف حسین چاہتی ہے۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار ایم کیو ایم کے زیر اہتمام کراچی میں جشن آزادی کے موقع پر منعقدہ میوزک فیسٹول کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا اجتماع میں ایم کیو ایم کے کارکن اور عوام کی بڑی تعداد موجود تھی۔ الطاف حسین کا کہنا تھا کہ میرے خلاف ایف آئی آر درج کرا کر مجھے انٹر پول کے ذریعے ڈرانے کا سوچنے والے بے وقوف ہیں میں اپنی جدوجہد جاری رکھوں گا عوام فیصلہ کر لیں کہ انہیں کیا کرنا ہے۔ انہوں نے چیف آف آرمی اسٹاف جنرل راحیل شریف کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ جن لوگوں نے1992ء کے آپریشن کے موقع پر کراچی کے مختلف علاقوں میں جرائم پیشہ عناصر کی سرپرستی کی تھی وہی قوتیں آج ایک بار پھر لانڈھی کورنگی سمیت دیگر علاقوں میں ان ہی جرائم پیشہ عناصر کو اپنی سرپرستی میں عوام پر مسلط کر رہے ہیں۔ الطاف حسین نے کہا کہ وزیر اعظم محمد نواز شریف اور وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے وعدہ خلافی کی ہے انہوں نے کراچی میں ٹارگٹڈ آپریشن شروع کرتے وقت آپریشن کی نگرانی کے لئے مانیٹرنگ کمیٹی بنانے کا وعدہ کیا تھا لیکن آج تک یہ کمیٹی نہیں بنی۔ الطاف حسین نے عوام سے کہا کہ ہمارے پاس دو ہی راستے ہیں یا تو مقابلہ کرتے رہیں اور روزانہ لاشیں اٹھاتے رہیں اور ہم سب اکٹھے مر جائیں یا پھر ایم کیو ایم کو ختم کر دیں جس کہے جواب میں عوام نے الطاف حسین کے ساتھ جینے اور مرنے کا وعدہ کیا اور تحریک کو جاری رکھنے کے عزم کا اظہار کیا۔

Tags: