کراچی میں فضل الرحمن کے VIP پروٹوکول سے بدترین ٹریفک جام

August 18, 2015 4:08 pm0 commentsViews: 37

جے یو آئی کے سربراہ کو پہلی بار اتنا پروٹوکول دیا گیا ہے، ایئرپورٹ سے اسٹیٹ گیسٹ ہائوس تک پولیس تعینات
شاہراہ فیصل پر ایک جانب کے تمام کٹ بند کر دیئے گئے تھے، سروس روڈ پر بھی گاڑیوں کی پارکنگ پر پابندی تھی
کراچی(اسٹاف رپورٹر)جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کی کراچی آمد کے موقع پر سیکورٹی کے سخت انتظامات اور پروٹوکول نے شہریوں کو ذہنی اذیت میں مبتلا کردیا اور دن کے وقت میں کئی مقامات پر بدترین ٹریفک جام رہا۔ پہلی بار مولانا فضل الرحمن کو اتنا پروٹوکول دیا گیا۔ کراچی ایئرپورٹ سے اسٹیٹ گیسٹ ہائوس تک پولیس اور ٹریفک پولیس کی بھاری نفری نے شاہراہ فیصل کے ایک جانب کے تمام کٹ بند کردیے اور سروس روڈ پر گاڑیوں کی پارکنگ بھی ممنوع قرار دے دی جس سے سخت گرمی میں شہری پسینے میں شرابور ہوگئے۔کراچی ایئرپورٹ سے متصل پی آئی اے ہیڈ آفس، سول ایوی ایشن اتھارٹی و دیگر ایئرلائنز کے دفاتر کے باہر کھڑی گاڑیوں کو بھی ہٹا دیا گیا تھا۔ جبکہ ایک درجن سے زائد گاڑیوں کو ٹریفک پولیس نے کارلفٹر کے ذریعے اٹھا لیا۔ اسکولوں کی چھٹی کے وقت شاہراہ فیصل سے متصل شاہراہوں پر ٹریفک کا نظام درہم برہم رہا۔ فلائی اوور اور اطراف کی سڑکوں پر بھاری نفری تعینات رہی۔ جبکہ ٹریفک سگنل کو بند کرکے پولیس اہلکار ٹریفک کنٹرول کرتے رہے اور یہ سلسلہ مولانا فضل الرحمن کی آمد تک جاری رہا۔

Tags: