شجاع خانزادہ پر خودکش حملہ میں جانور کے استعمال کا انکشاف

August 18, 2015 4:10 pm0 commentsViews: 35

جائے وقوع سے انسانی اعضاء کے ساتھ بچھڑے کے اعضاء بھی ملے‘ جائے وقوع تک بارود جانور پر رکھ کر پہنچایا گیا‘ ذرائع
خودکش بمباروں کے ڈی این اے نمونے حاصل کرلئے گئے‘ موبائل فون کا ریکارڈ بھی جمع کیا جائیگا‘ رپورٹ وزیر اعلیٰ پنجاب کو پیش
اسلام آباد(نیوز ایجنسیاں)اٹک میں وزیرداخلہ پنجاب پر حملے میں جانور کے استعمال کا انکشاف ہوا ہے۔ مشترکہ ٹیم نے تحقیقات کا آغاز کرتے ہوئے دونوں خودکش بمباروں کے ڈی این اے کے لیے نمونے حاصل کرلیے جبکہ نادرا نے بھی مطلوبہ ریکارڈ فراہم کردیا۔ تفصیلات کے مطابق اٹک دھماکے کی تحقیقات کے لیے مشترکہ ٹیم نے فوری بنیادوں پر اپنا کام شروع کردیا ہے۔ ٹیم میں ملٹری انٹیلی جنس، آئی ایس آئی، شعبہ انسداد دہشت گردی، پولیس اور اسپیشل برانچ کے نمائندے شامل ہیں۔ ٹیم علاقے کی جیوفینسنگ کرے گی۔ 100 میٹر کے دائرے میں دھماکے سے 3 گھنٹے قبل اور 2گھنٹے بعد کا موبائل فون کالز کا ڈیٹا جمع کیاجائے گا۔ ٹیم براہ راست وزیرداخلہ چوہدری نثار علی خان کو رپورٹ پیش کرے گی۔ مزید برآں نجی ٹی وی کے مطابق شجاع خانزادہ پر خودکش حملے میں ایک جانور کے استعمال کا انکشاف ہوا ہے۔ جائے وقوعہ سے انسانی اعضاء کے ساتھ بچھڑے کے اعضاء بھی ملے ہیں۔ ذرائع کے مطابق جائے وقوعہ تک بارود جانور پر رکھ کر پہنچایا گیا۔ ایک دوسرے نجی ٹی وی کے مطابق خودکش دھماکے سے شجاع خانزادہ اور ان کے 3 ساتھیوں کے جسم جھلس گئے تھے۔ دوسری جانب دھماکے کی ابتدائی رپورٹ وزیراعلیٰ پنجاب کو پیش کردی گئی ہے جبکہ نادرا نے بھی حملہ آوروں کا ریکارڈ تفتیشی ٹیم کو فراہم کردیا ہے۔

Tags: