رشید گوڈیل پر حملہ نہ ہوتا تو ایم کیو ایم کے استعفوں کی واپسی کا فیصلہ ہو جاتا

August 19, 2015 4:29 pm0 commentsViews: 28

حکومت اسی ہفتے ایم کیو ایم کے حوالے سے عام معاملات حل کرنا چاہتی ہے
کراچی( نیوز ڈیسک) متحدہ قومی موومنٹ کے رہنما اور رکن قومی اسمبلی رشید گوڈیل کا واقعہ پیش نہ آتا تو 72 گھنٹوں میں ایم کیو ایم کے اراکین اسمبلی کے استعفوں کی واپسی کا فیصلہ ہوجاتا ‘ اس لئے کہ حکومت چاہتی ہے کہ جلد سے جلد ایم کیو ایم کے اراکین کے استعفوں کا مسئلہ حل کرلیا جائے‘ اب اس بات کا امکان ہے کہ اسی ہفتے ایم کیو ایم کے حوالے سے تمام معاملات حل کرلئے جائیں‘ ذرائع کے مطابق رشید گوڈیل پر حملے کے ذریعے سے ایم کیو ایم اور حکومت کے درمیان مذاکرات کو سبوتاژ کرنے کی کوشش کی گئی‘ صورتحال کی نزاکت کو سمجھتے ہوئے ایم کیو ایم اور اس کے کارکنوں کی جانب کسی بھی قسم کی بے چینی کا مظاہرہ نہیں کیا گیا۔

Tags: