گھریلو بجلی کے بلوں میں30 فیصد اضافہ ظالمانہ ہے، پیپلزپارٹی

August 19, 2015 4:49 pm0 commentsViews: 18

وفاقی حکومت کے فیصلے سے عوام مہنگائی کے بوجھ تلے دب جائیں گے، انتہاء پسندی اور دہشت گردی کو فروغ ملے گا
افسوسناک بات ہے کہ اعلیٰ عدالتیں اس ظلم پرسوموٹو نوٹس نہیں لے رہی، اراکین صوبائی اسمبلی
کراچی( اسٹاف رپورٹر) پاکستان پیپلز پارٹی کے اراکین صوبائی اسمبلی سید ضیاء عباس، ساجد جوکھیو، شمیم ممتاز اور خیر النساء مغل نے کے الیکٹرک کی جانب سے گھریلو صارفین کیلئے ماہانہ بجلی کے بلوں میں30 فیصد اضافے پر شدید رد عمل کا اظہار کیا ہے۔ جبکہ کے الیکٹرک کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ یہ اضافہ وفاقی حکومت کے حکم پر کیا گیا ہے۔ پی پی پی میڈیا سیل سے جاری بیان میں انہوں نے کہا کہ گھریلو صارفین پر بلا جواز 30 فیصد اضافے سے غربت اور مہنگائی میں اضافہ ہوگا جبکہ اس سے انتہا پسندی اور دہشت گردی کی سوچ پروان چڑھے گی جس سے نمٹنے کیلئے حکومت کو30 فیصد اضافے کے بدلے میں دو گنی رقم امن و امان پر خرچ کرنا ہوگی۔ لیکن نتیجہ صفر ہی رہے گا۔ عوام مہنگائی کے بوجھ تلے دب جائیں گے اور تعلیم کے حوالے سے اہداف پورے نہیں ہو سکیں گے۔ وفاقی حکومت کے حالیہ ظالمانہ اقدام سے ثابت ہو چکا ہے کہ موجودہ حکومت پوری طرح سے ملک و قوم کو ورلڈ بینک اور آئی ایم ایف کی غلامی دے چکی ہے اور18 ارب ڈالر کے جو قرضے حکومت نے اپنی عیاشی اور شاہانہ ٹھاٹ بھاٹ کیلئے لئے وہ اب کراچی کے عوام سے وصول کئے جا رہے ہیں انہوں نے کہا کہ اس سے بھی زیادہ افسوس کا مقام ہے کہ ملک کی اعلیٰ عدالتیں بھی اس ظلم کے خلاف کوئی سوموٹو نوٹس نہیں لے رہی۔ انہوں نے انسانی حقوق کی تنظیموں اور سول سوسائٹی سے اپیل کی کہ وہ اس ظلم کے خلاف آواز اٹھائیں۔