چنگ چی رکشوں پر پابندی کیخلاف مزار قائد پر عوامی دھرنا

August 19, 2015 4:56 pm0 commentsViews: 22

انتظامیہ سے مذاکرات میں مسائل کے حل کیلئے کمیٹی بنانے اور پکڑے گئے رکشے چھوڑنے پر اتفاق کیا گیا ہے
ہزاروں لوگوں سے روزگار چھینا گیا تو احتجاجی تحریک جاری رہے گی‘ امیر جماعت اسلامی کراچی کا مظاہرے سے خطاب
کراچی( اسٹاف رپورٹر) چنگ چی رکشوں پر پابندی سے متاثرہ افراد کے روزگار کی بحالی کے لئے جماعت اسلامی کے تحت منگل کو مزار قائد پر عوامی دھرنا دیا گیا جس میں چنگ چی اور رکشہ کے روزگار سے وابستہ ہزاروں افراد نے شرکت کی اور غم و غصے کا اظہار کیا۔ مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ اگر حکومت اور انتظامیہ سے مذاکرات میں کئے گئے وعدے اور مطالبات پورے نہ کئے گئے تو سراج الحق کی قیادت میں وزیر اعلیٰ ہائوس پر دھرنا دیں گے۔ ڈی آئی جی ٹریفک اور آئی جی فوری طور پر ان تمام سی این جی رکشوں کو چھوڑنے کا حکم دیں جن کو گزشتہ دنوں میں پکڑا گیا تھا۔ ہم مذاکرات اور قانونی طور پر مسئلے کے حل پر یقین رکھتے ہیں لیکن اگر ہزاروں لوگوں سے ان کا روزگار چھینا گیا تو احتجاجی تحریک جاری رہے گی۔ انہوں نے بتایا کہ آج ہماری حکومت اور انتظامیہ سے مذاکرات ہوئے ہیں۔ مسائل کے حل کیلئے ایک کمیٹی بنانے پر اتفاق کیا گیا ہے اور یہ بھی طے پایا گیا ہے کہ جو چنگ چی اور سی این جی رکشہ بند کئے گئے ہیں انہیں چھوڑ دیا جائے گا۔ اس سلسلے میں مزید مذاکرات ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ نعمت اللہ خان کے دور میں ماس ٹرانزٹ نظام لانا تھا مگر اس منصوبے کو مکمل نہ ہونے دیا گیا۔ اگر یہ منصوبہ مکمل ہوجاتا ہے تو آج یہ صورتحال پیدا نہ ہوتی۔ ہم عدالت سے بھی رجوع کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی کا اس شہر سے بہت گہرا تعلق ہے۔ مسئلہ صرف چنگ چی اور سی این جی رکشوں کی بحالی کا نہیں بلکہ ضروری ہے کہ کراچی کے بنیادی مسائل حل ہوں اور شہر کو دہشت گردوں اور بھتہ خوروں سے نجات ملے۔

Tags: