منشیات کی لعنت کے خاتمے کیلئے ملکر کام کرنا ہوگا، گورنر سندھ

August 19, 2015 5:09 pm0 commentsViews: 33

معاشرے میں آگہی پیدا کرنے کی ضرورت ہے، اختتامی تقریب سے خطاب، شاہد آفریدی بھی شریک ہوئے
کراچی(سٹی رپورٹر)گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العبادخان نے کہا ہے کہ آج صوبہ سندھ میں منشیات سے آگاہی کی مہم کا آغاز اس کی روک تھام کے بارے میں شعور اور اس سے منسلک سماجی ، نفسیاتی ، اقتصادی اور جسمانی نقصانات کی آگاہی فراہم کرنے کا اولین مرحلہ ہے اس ضمن میںاور محکمہ داخلہ سندھ کی کاوشیں قابل تعریف ہیںجن کے باعث اس اہم معاملے کی جانب لوگوں کو آگہی دی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ منشیات کے استعمال سے معاشرتی، معاشی، ذہنی اور جسمانی نقصانات ناقابل بیان ہیں ضروت اس امر کی ہے کہ عوام کو سمجھایا جائے کہ کس طرح منشیات کے استعال سے ایک صحت مند معاشرہ تباہ ہوجاتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گورنر ہائوس میں اقوام متحدہ کے ذیلی ادارے انسداد منشیات اور جرائم کے زیر اہتمام منشیات سے آگہی مہم کی افتتاحی تقریب سے خطاب میں کیا۔ تقریب میں سیکریٹری نارکوٹکس کنٹرول ڈویژن محمد علی غالب، UNODC کے پاکستان میں نمائندے Cesar Guedes ، امریکی ادارہ انٹر نیشنل نارکوٹکس اینڈ لاء افیئرز کی Nilson K. Jennifer and Brooke DEMontilizin ، اقوام متحدہ کے سفیر شاہد خان آفریدی سمیت دیگر متعلقہ اداروں کے حکام نے شرکت کی ۔گورنرسندھ نے کہا کہ 2013 ء میںکئے جانے والے ایک سروے کے مطابق پاکستان میں منشیات کے استعمال میں واضح اضافہ دیکھا گیا جس میں صوبہ سندھ دوسرے نمبر پر رہا۔ اعداد و شمار کے مطابق تقریباً 11 لاکھ افراد کینابی (Cannabis) استعمال کرتے پائے گئے ،5 لاکھ 70 ہزار افراد Opioim، 96 ہزار افراد منشیات کے استعمال کے لئے انجیکشن استعمال کرتے پائے گئے جبکہ 3 لاکھ 10 ہزار افراد نشہ کے طور پر نیند کی گولیوں کا استعمال کرتے ہیں، گورنر سندھ نے کہا کہ منشیا ت کے حوالے سے آگہی کا یہ پروگرام سندھ میں پہلا قدم ہے۔

Tags: