آج صبح، رینجرز اور پولیس کا سرچ آپریشن،41 افراد گرفتار ۔ دیگر جرائم و واقعات میں مزید گرفتاریاں

August 20, 2015 3:20 pm0 commentsViews: 28

بلوچ کالونی، بہادر آباد اور نیو ٹائون میں سرچ آپریشن کے دوران داخلی و خارجی راستے بند کر دیئے گئے
شاہ فیصل کالونی میں رینجرز کا چھاپہ، سیاسی جماعت کا کارکن گرفتار، اسلحہ برآمد، سنگین وارداتوں میں مطلوب تھا
کراچی( کرائم رپورٹر) آج صبح سویرے رینجرز اور پولیس کا بلوچ کالونی، بہادر آباد اور شاہ فیصل کالونی میں سرچ آپریشن،41 افراد زیر حراست، تفصیلات کے مطابق آج صبح پولیس نے بلوچ کالونی، بہادر آباد اور نیو ٹائون میں سرچ آپریشن کرتے ہوئے داخلی و خارجی راستوں پر رکاوٹیں لگا کر سیل کر دیا اور کسی بھی شخص کو علاقے کے اندر یا باہر جانے کی اجازت نہیں تھی۔ پولیس نے علاقے میں سرچ آپریشن کرتے ہوئے 40 افراد کو حراست میں لے کر تفتیش کیلئے تھانے منتقل کر دیا۔ پولیس ذرائع نے بتایا کہ ملزمان کے قبضے سے اسلحہ، منشیات اور چھینی و چوری شدہ موٹر سائیکل بر آمد ہوئی ہے۔ دریں اثناء شاہ فیصل کالونی میں رینجرز نے آپریشن کرتے ہوئے ایک ملزم کو حراست میں لے کر تفتیش کے لئے نا معلوم مقام پر منتقل کر دیا۔ رینجرز ذرائع کے مطابق ملزم کے قبضے سے اسلحہ بر آمد ہوا ہے اور ملزم کا تعلق سیاسی جماعت سے ہے اور ملزم متعدد سنگین وارداتوں میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کو مطلوب تھا۔

دائود انجینئرنگ کالج کے طلبہ کا مظاہرہ،12گرفتار
4پولیس اہلکاروں کو زخمی کرنے کا دعویٰ
پولیس نے مشتعل طلبہ کو سڑک سے ہٹانے کے لیے لاٹھی چارج کردیا، 100 سے زائد طلبہ کے خلاف انسداد دہشت گردی کا مقدمہ درج
طلبہ کے مظاہرے کے باعث گرومندر، نیو ایم اے جناح رود اور لسبیلہ جانے والی ٹریفک جام، گاڑیوں کی طویل قطاریں لگ گئیں
کراچی( اسٹاف رپورٹر) پولیس نے اپنے مطالبات کے حق میں مظاہرے کرنے والے دائود انجینئرنگ کالج کے12 طلبہ سمیت 100 سے زائد طلبہ کے خلاف انسداد دہشت گردی ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کرلیا ہے۔ پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ مظاہرین نے پولیس پر پتھرائو کے ساتھ فائرنگ بھی کی جس کے نتیجے میں4 اہلکار زخمی ہوئے۔ تفصیلات کے مطابق جمشید کوارٹر کے علاقے نیو ایم اے جناح روڈ پر قائم دائود انجینئرنگ کالج کے طلباء کی کثیر تعداد بدھ کی صبح کالج کے سامنے سڑک پر جمع ہوگئی اور انتظامیہ کے خلاف اپنے مطالبات کو نہ مانے جانے کے حوالے سے احتجاج شروع کر دیا جس کے نتیجے میں گرومند، نیو ایم اے جناح روڈ اور لسبیلہ جانے والی ٹریفک بری طرح سے متاثر ہوئی اور گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں۔ واقعے کی اطلاع ملتے ہی علاقہ پولیس کی بھاری نفری موقع پر پہنچ گئی اور مظاہرین کو منتشر کرنے کی کوشش کی، مشتعل طلبہ نے پولیس پر پتھرائو شروع کر دیا جس کے نتیجے میں پولیس کے4 اہلکار سر پر پتھر لگنے سے زخمی ہوگئے۔ جن کو فوری طور پر قریبی اسپتال پہنچایا گیا۔ پولیس نے مشتعل طلبہ کو سڑک سے ہٹانے کے لئے لاٹھی چارج کرتے ہوئے 12 طلبہ کو گرفتار کرکے ان کے خلاف سرکاری مدعیت میں مقدمہ الزام نمبر15/260 زیر دفعہ 7ATA انسداد دہشت گردی ایکٹ کے تحت درج کر لیا۔

وزیر دفاع کی آبائی رہائش گاہ
کے باہر سے مشکوک شخص گرفتار
لاہور (نیوز ڈیسک) وزیر دفاع کی آبائی رہائش گاہ کے باہر سے مشکوک شخص گرفتار کرلیا گیا‘ تفتیش کے دوران اہم انکشافات کی توقع ہے‘ ذرائع کا کہنا ہے کہ ملزم وزیر دفاع کی رہائش گاہ کی جاسوسی کررہا تھا تاہم پولیس نے گرفتاری کی تردید کی ہے۔

دو گینگ وار کارندے گرفتار
دو موٹر سائیکلیں برآمد
کراچی( کرائم رپورٹر)بغدادی پولیس نے لیاری پکچر روڈ پر کارروائی کرتے ہوئے گینگ وار کارندے فیضان ولد لال محمد بلوچ کو گرفتارکرکے اسلحہ ،کھارادر اور پریڈی کے علاقے سے چوری ہونے والی دو موٹر سائیکلیں برآمد کرلی۔

کلفٹن: وردی کے بغیر ڈیوٹی کرنے والے11 سیکورٹی اہلکار گرفتار
چنیسر گوٹھ کے علاقے میں سرچ آپریشن اسٹریٹ کرمنل گرفتار،21 مشکوک افراد کو بھی حراست میں لے لیا گیا
گرفتار سیکورٹی گارڈز بنگلوں اور دفاتر میں بغیر وردی کے ڈیوٹی انجام دیتے ہوئے پائے گئے تھے
کراچی( کرائم رپورٹر)محمودآباد پولیس کی بھاری نفری نے چنیسر گوٹھ اور ٹی پی ٹو کے علاقے میں سرچ آپریشن کے دوران اسٹریٹ کرائم میں ملوث شہزاد علی کو گرفتار کیا جبکہ 21مشتبہ افراد کو حراست میں لیکر تھانے منتقل کردیا جہاں پولیس نے تفتیش کے بعد 12افراد کو رہا کردیا جبکہ مزید افرد سے تفتیش جاری ہے ۔سائوتھ زون پولیس کی بھاری نفری نے کلفٹن کے مختلف علاقوںمیں چھاپہ مارکارروائی کے دوران بغیر سیکیورٹی کی وردی میں ملبوس 11سیکیورٹی گارڈکو گرفتار کرکے مقدمہ درج کرلیا ،پولیس کا کہنا ہے کہ پولیس نے کراچی میں قائم سیکیورٹی ایجنسیز کو متعدد بار بتایاتھا کہ کوئی بھی سیکیورٹی کمپنی کا گارڈبغیر وردی میں ملازمت نہیں کریں گا ،اسکے باوجود یہ بنگلوں اور دفاتروں میں بغیر وردی کے ڈیوٹی انجام دیتے ہوئیے پائے گئے جن کے خلاف قانونی کارروائی کی گئی ۔

کراچی میں پولیس مقابلے‘ چھاپے
85 ملزمان کو گرفتار کرلیا گیا
کراچی(کرائم رپورٹر)کراچی پولیس نے چھاپہ مار کارروائیوں کے دوران85ملزمان کو گرفتار کرکے ملزمان کے قبضے سے اسلحہ،دستی بم اور منشیات برآمد کرلی،کراچی پولیس ترجمان کی جانب سے جاری ہونے والے اعلامیئے کے مطابق کراچی کے تینوں زون کی پولیس اور سی آئی اے نے گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران شہر کے مختلف علاقوں میں92 چھاپہ مار کارروائیوں اور10 مقابلوں کے بعد85 ملزمان کو گرفتارکر لیا ،گرفتار ملزمان میں1 دہشت گرد،3ڈکیت ،غیرقانونی اسلحہ رکھنے کے الزام میں27ملزمان ،امتنائے منشیات ایکٹ کے تحت 22 ملزمان، 6 مفرور و اشتہاری جبکہ دیگرجرائم میں ملوث24 ملزمان شامل ہیں، جن کے قبضے سے31 پستول ،1 دستی بم اور بھاری مقدارمیں منشیات برآمدہوئی ہے ،گرفتار ملزمان کے خلاف مقدمات درج کر کے تفتیش شروع کردی گئی ہے۔

اربوں کی سرکاری اراضی پر قبضہ کرنے والا ہارون پنجوائی گرفتار
ملزم عام شہریوں کی حسن بروہی گوٹھ میمن کالونی کی زمینوں پر قبضے کرنے میں بھی ملوث ہے
کراچی(اسٹاف رپورٹر) قومی احتساب بیورو کراچی نے سینکڑوں ایکڑ سرکاری اراضی پر قبضہ کرنے اور جعلی دستاویزات بنانے میں ملوث ہارون پنجوانی کو کراچی سے گرفتار کرلیا‘ ہارون پنجوانی پرگوٹھ آباد اسکیم کی جعلی دستاویزات کے ذریعے اربوں روپے مالیت کی قیمتی اراضی پر قبضہ کرنے کا الزام ہے‘ نیب ترجمان کے مطابق ہارون پنجوانی غیر قانونی طور پر سرکاری اراضی کے علاوہ عام شہریوں کی حسن بروہی گوٹھ میمن کالونی کی زمینوں پر قبضہ کرنے میں بھی ملوث ہے۔

رشید گوڈیل پر حملہ، اہم شواہد مل گئے، متعددافراد گرفتار
واقعہ کے وقت کار میں ایک خاتون بھی موجود تھی جس سے ملزمان کے طریقہ واردات اور شناخت کے بارے میں معلومات حاصل کرلی گئیں
رات گئے مقدمہ درج، رشید گوڈیل کی اپنی موت کے بارے میں پیش گوئی اہم ہے، حملہ آور کی اطلاع دینے پر 50 لاکھ روپے انعام کااعلان
کراچی( اسٹاف رپورٹر) متحدہ کے رہنما رشید گوڈیل پر حملے کے بارے میں حساس اداروں نے اہم شواہد حاصل کر لئے۔ ذرائع کے مطابق سلامتی پر مامور ایک حساس ادارے نے رشید گوڈیل پر حملے کے بعد کار چلا کر اسپتال تک جانے والے شخص کا تفصیلی انٹر ویو کر لیا ہے۔ دیگر عینی شاہدین کے بیانیات بھی لئے ہیں۔ کار اسپتال تک لانے والے شخص کے بیان سے ملزم کے بارے میں اہم معلومات ملی ہیں۔ تحقیقاتی اداروں نے کالعدم تنظیم کے کارندوں سمیت متعدد افراد کو حراست میں لے کر تفتیش شروع کر دی۔ ملزمان کی اطلاع دینے پر 50 لاکھ روپے انعام کا اعلان بھی کیا گیا ہے۔ ذرائع نے کہا کہ واقعے کے وقت کار میں عقبی نشست پر ایک خاتون بھی موجود تھیں جس کی پولیس افسران مسلسل تردید کر رہے ہیں تاہم ایک سی سی ٹی وی ویڈیو میں کار میں سے خاتون کو اتر کر بھاگتے ہوئے دیکھا گیا۔ اس خاتون سے بھی رابطہ کیا گیا اور خاتون کی شناخت کو صیغہ راز میں رکھتے ہوئے ملزمان کے طریقہ واردات اور شناخت کے حوالے سے ٹھوس معلومات حاصل کر لی گئی ہیں۔ علاوہ ازیں رات گئے رکن قومی اسمبلی رشید گوڈیل پر قاتلانہ حملے کا مقدمہ نمبر 15/254 زیر دفعہ 34/302.324 اور انسداد دہشت گردی ایکٹ 7ATA کے تحت نا معلوم ملزمان کے خلاف زخمی رہنما کے بہنوئی سلیم کی مدعیت میں درج کرلیا گیا۔ بدھ کو ایس پی گلشن اقبال عابد قائم خانی نے بتایا کہ پولیس اور رینجرز نے جائے واردات کا معائنہ کیا ہے۔ اور رشید گوڈیل کے زیر استعمال روٹس کا نقشہ تیار کر لیا ہے جس میں آنیوالی متعدد سی سی ٹی وی فوٹیج بھی تحویل میں لے لی گئی ہیں۔ رشید گوڈیل کی کار کی فارنزک رپورٹ آگئی ہے جبکہ گولیوں کے خول کی رپورٹ جلد موصول ہوجائے گی۔ ملزمان نے سائلنسر لگے پستول سے فائرنگ نہیں کی کیونکہ فائرنگ کی آواز سے قریب موجود لوگوں میں بھگدڑ مچ جاتی ۔ انہوں نے بتایا کہ تحقیقاتی ادارے واردات کی جیو فینسنگ بھی کرائیں گے جس سے مزید معلومات حاصل ہو سکیں گی۔ انہوں نے بتایا کہ پولیس نے حال ہی میں رہا ہونے والے فورتھ شیڈول میں شامل چند کالعدم تنظیم کے کارندوں کو حراست میں لیا ہے جن سے تفتیش جاری ہے۔ انہوں نے بتایا کہ رشید گوڈیل کی اپنی موت کے حوالے سے پیشگوئی اہم ہے۔ یہ بات انہوں نے کسی سے شیئر نہیں کی تھی لیکن یہ جاننا اہم ہے کہ انہیں کس سے خطرہ تھا؟ آئی جی سندھ حملے کے حوالے سے آج ایپکس کمیٹی میں رپورٹ پیش کریں گے۔

 

Tags: