شید گوڈیل پر حملہ ،2 ملزمان نے چلتی کار میں مہارت سے گولیاں چلائیں

August 21, 2015 4:35 pm0 commentsViews: 21

نائن ایم ایم پستول سے8 گولیاں ماری گئیں، کار سے 8خول ملے، نشانات زیادہ پائے گئے
کار چلانے والے شخص کی تلاش جاری ہے جس کے بیان کے بعد حقائق سامنے آئیں گے
گوڈیل کی اہلیہ ڈرائیور کو گولی لگتے دیکھ کر نیچے جھک گئیں، ڈی ایس پی ناصر لودھی
کراچی( نیوز ڈیسک) متحدہ کے رہنما رشید گوڈیل پر حملے سے متعلق تفتیشی ٹیم کے اہم افسر ڈی ایس پی ناصر لودھی نے کہا ہے کہ رکن قومی اسمبلی پر حملہ کرنیوالے ملزمان کی تعداد2 تھی جو موٹر سائیکل پر سوار ہو کر ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے بہادر آباد قرطبہ مسجد سے متصل گلی نمبر3 میں پہنچے اور چلتی کار میں مہارت سے ڈرائیور کو گولی ماری جو اس کی گردن میں لگی۔ بعد ازاں ملزمان نے کالے شیشے کے عقب میں موجود رشید گوڈیل کو انتہائی مہارت سے گولیاں ماریں جبکہ کار میں ان کے ساتھ بیٹھی اہلیہ نے اپنے ریکارڈ کرائے بیان میں کہا کہ وہ ڈرائیور کو گولی لگتا دیکھتے ہی گاڑی میں نیچے کی جانب جھک گئی تھیں جس کی وجہ سے انہیں گولی نہیں لگی۔ ملزمان نے نائن ایم ایم پستول سے8 سے زائد گولیاں چلائیں تاہم خول صرف8 ملے جبکہ گاڑی میں گولی لگنے کے8 سے زائد نشانات پائے گئے ہیں انہوں نے وضاحت کی کہ ملزمان کی جانب سے باہر سے گولیاں چلانے کا واضح ثبوت شیشے کا ٹوٹ کر اندر گرنا اور گولیاں سیٹ سمیت دیگر مقامات پر اندر کی جانب پیوست ہونا ہے اگر گولی اندر سے چلائی گئی تو شیشے ٹوٹ کر زمین پر گرتے اور ایسا کوئی ثبوت پولیس کو نہیں ملا ہے۔ ڈی ایس پی نے کہا کہ حملے کے بعد کار چلانیوالے شخص کی تلاش جاری ہے۔ جس کے بیان کے بعد حقائق سامنے آئیں گے۔

Tags: