ہمارے استعفے منظور کئے جائیں‘ فضل الرحمن مزید زحمت نہ کریں‘ متحدہ قومی موومنٹ

August 22, 2015 2:06 pm0 commentsViews: 24

گورنر ہائوس کراچی میں وزیر اعظم کے دھمکی آمیز لہجے کی مذمت کرتے ہیں‘ متحدہ کے ارکان کو تینوں ایوانوں سے مستعفی سمجھا جائے
رابطہ کمیٹی پاکستان اور لندن کا مشترکہ ہنگامی اجلاس‘ حکومت سے جاری مذاکرات اور علیحدہ صوبے کیلئے جدوجہد سے متعلق فیصلے کئے گئے
کراچی( اسٹاف رپورٹر) متحدہ قومی موومنٹ کی رابطہ کمیٹی پاکستان اور لندن کے ارکان کا مشترکہ ہنگامی اجلاس ہوا جس میں ایم کیو ایم کے تمام شعبہ جات کے ارکان نے شرکت کی‘اجلاس میں ایم کیو ایم کے ارکان سینیٹ ‘ قومی اسمبلی اور صوبائی اسمبلی کے استعفوں کے حوالے سے مولانا فضل الرحمن کی ثالثی میں مذاکرات اور حکومتی رویے کا تفصیلی جائزہ لیا گیا‘اجلاس میں ایم کیو ایم کے منتخب نمائندوں کے استعفوں‘ حکومت سے جاری مذاکرات اور علیحدہ صوبے کیلئے جدوجہد کے حوالے سے اہم فیصلے بھی کئے گئے اجلاس کے شرکاء نے وزیراعظم کے گورنر ہائوس کراچی میں لب و لہجہ کو دھمکی آمیز قرار دیا اور اس کی مذمت کی ‘اجلاس میں کہا گیا کہ وزیراعظم میاں محمد نواز شریف نے کراچی آکر نہ تو مولانا فضل الرحمن کے ثالثی کے کردار کی قدرکی اورنہ ہی کراچی کے لاکھوں غم زدہ اور روتے تڑپتے ہوئے خاندانوں کے زخموں پر مرہم رکھا‘ اجلاس میں کہا گیا کہ رابطہ کمیٹی کے ارکان کی دلی خواہش ہے کہ مولانا فضل الرحمن ہمارے بزرگ کی حیثیت سے جب چاہیں ہم سے رابطہ کرسکتے ہیں لیکن وہ ایم کیو ایم اور حکومت کے درمیان مذاکرات کیلئے صلح کار‘ مذاکرات کار یا ثالث کی حیثیت سے مزید زحمت نہ کریں‘ اجلاس میں کہا گیا کہ پوری پارٹی کا متفقہ فیصلہ ہے کہ ایم کیو ایم کے ارکان سینیٹ‘ قومی و صوبائی اسمبلی نے احتجاجاً اپنے استعفے دیدیے ہیں انہیں حکومت کو ہر قیمت پر تسلیم کرنا ہوگا او اس پریس ریلیز کے بعد ایم کیو ایم منتخب رکن کو تینوں ایوانوں سے مستعفی سمجھا جائے۔

Tags: