ٹھٹھہ میں سیلابی پانی سے تباہی 60 دیہات ڈوب گئے دو خواتین ہلاک

August 22, 2015 4:04 pm0 commentsViews: 22

ہزاروں ایکڑ اراضی پر کھڑی فصلیں‘کیلے اور پپیتے کے باغات اور پان کے سینکڑوں فارم بھی تباہ ہوگئے
ضلعی انتظامیہ کی جانب سے متاثرہ علاقوں کے رہائشیوں کو نکالنے کا کوئی بندوبست نہیں‘ کسی حکومتی اہلکار نے خبر نہیں لی‘ متاثرین
گھارو( نیوز ڈیسک) ضلع ٹھٹھہ کے ساحلی علاقے گھوڑا باری کھارو چھان اور کیٹی بندر میں سیلابی پانی نے زبردست تباہی مچا دی ۔60 سے زائد گوٹھ مکمل طور پر ڈوب گئے سینکڑوں پان کے فارم تباہ ہزاروں ایکڑ اراضی پر کھڑی فصلیں، کیلے اور پپیتے کے باغات کہے علاقہ ٹماٹر اور سبزیاں تباہ ہوگئیں دو خواتین جاں بحق ایک بچہ سانپ کے کاٹنے سے زخمی ہوگیا۔ ضلعی انتظامیہ کی جانب سے متاثرہ علاقوں سے لوگوں کو نکالنے کا کوئی بندوبست نہیں کیا گیا تاہم ان مقامات پر انڈس ڈیلٹا ڈیولپمنٹ کی لوکل سپورٹ آرگنائزیشن کے کارندے پانی میں پھنسے ہوے لوگوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کرتے نظر آئے انہوں نے بتایا کہ ہم تین روز سے اپنے خرچ پر کشتیوں کے ذریعے لوگوں کو محفوظ مقامات پر پہنچا رہے ہیں جبکہ ہمارے پاس کوئی فنڈ نہیں دوسری طرف حسن علی پالانی میں مریم خاتون سانپ کے ڈسنے کے باعث چل بسی جبکہ ایک خاتون زرینہ پانی میں ڈوب کر چل بسی اسی طرح 18 سالہ لڑکے عبداللہ گجر کو سانپ نے ڈس لیا جو کہ بھگان اسپتال میں زیر علاج ہے متاثرہ علاقوں سے محفوظ مقامات پر منتقل ہونے والوں کا بھی کوئی پرسان حال نہیں متاثرین کا کہنا ہے کہ پانی اس تیزی سے آیا کہ وہ صرف اپنی جان بچا کر نکلے ہیں اور ان کے پاس کھانے پینے کو نہیں ہے اور کسی حکومتی اہلکار نے بھی ان کی خبر نہیں لی ہے۔

Tags: