الطاف حسین کے خطاب پر پابندی کیخلاف متحدہ کا مظاہرہ

August 22, 2015 4:25 pm0 commentsViews: 24

پیمرا نے قائد تحریک کے براہ راست خطاب پر پابندی اور ریکارڈ انٹرویوز روک کر اظہار رائے کا ماورائے عدالت قتل کردیا ہے‘ فاروق ستار
مظاہرے کے شرکاء کے پیمرا کے خلاف نعرے‘ رابطہ کمیٹی کے ڈپٹی کنوینر سید شاہد پاشا‘ عبدالحسیب‘ گلفراز خان‘ فوزیہ حمید و دیگر کا خطاب
کراچی( اسٹاف رپورٹر) ایم کیو ایم کے قومی اسمبلی میں پارلیمانی لیڈر ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا کہ قائد تحریک الطاف حسین کے براہ راست خطاب پر پابندی اور ریکارڈ انٹر ویوز روک کر پیمرا نے بالا ہی بالا اظہار رائے اور اظہار خیال کا ماورائے عدالت قتل کر دیا ہے۔ اظہار رائے اور اظہار رائے کی آزادی پر پابندی آئین کے آرٹیکل 19 کی صریحاً نفی ہے اور اظہار رائے کی آزادی کو سلب کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جمہوریت کی روح آئین کی کسی شق کو قرار دیا جاتاہے تو وہ آرٹیکل 19 ہے۔ اس کے ہوتے ہوئے جہاں بولنے، رائے کے اظہار اور سننے پر پابندی ہو تو اس کے بعد کیسی جمہوریت، کہاں کی آزادی ہے۔ پاکستان کی آزادی کے اگست کے مہینے میں الطاف حسین کے ریکارڈ انٹر ویو پر بھی پابندی لگا دی گئی جس میں کوئی ایسی بات نہیں تھی جو افواج پاکستان، رینجرز کے متعلق ہو۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں پانچ سو موروثی سیاست کرنے والے خاندانوں نے جمہوریت کے نام پر بد ترین آمریت نافذ کر دی ہے جہاں صرف کراچی کے منظر نامہ کو دیکھ لیا جائے تو انسانی حقوق کی، آئینی حقوق کی بے دریغ پامالی کی جا رہی ہے۔ سنگین خلاف ورزیاں کی جا رہی ہیں اور اپنی مرضی کا آئین کراچی والوں کیلئے قائم کیا گیا ہے ایک علیحدہ قانون ہمارے لئے وضع کیا گیا ہے اور آئین کی تمام بنیادی حقوق کی شقوں کی بے توقیری کی جا رہی ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی پریس کلب کے باہر پیمرا کی جانب سے الطاف حسین کے براہ راست خطاب پر پابندی اور ریکارڈ پروگرام نشر کرنے سے روکنے کے خلاف پیمرا کے خلاف احتجاجی مظاہرے کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ احتجاجی مظاہرے کے شرکاء نے اپنے ہاتھوں میں پلے کارڈز اور بینرز اٹھا رکھے تھے جن پر پیمرا کے خلاف نعرے اور مطالبات درج تھے۔ احتجاجی مظاہرے کے شرکاء سے ایم کیو ایم کی رابطہ کمیٹی کے ڈپٹی کنوینر سید شاہد پاشا، ارکان عبدالحسیب، گلفراز خان خٹک، حق پرست رکن قومی اسمبلی فوزیہ احمد، حق پرست ارکان یوسف شاہوانی اور ہیر سوہو نے بھی خطاب کیا، احتجاجی مظاہرے کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا کہ ہم نے کراچی میں آپریشن کی مخالفت نہیں کی بلکہ آپریشن کا قبلہ درست کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ ٹی وی ٹاک شو میں کہا جا رہا تھا کہ اسلام آباد میں نئی ایم کیو ایم بن رہی ہے۔ مائنس الطاف حسین فارمولے کو طاقت سے مسلط کرنے میں ناکامی ہوئی تو پھر ایک ہی طریقہ تھا خود کو خوش کرنے کا کہ الطاف حسین کے جو رابطے ہیں ریکارڈ انٹر ویو کے ذریعے اسے بھی توڑا جائے۔ مائنس ون فارمولا پاکستان کے استحکام کے خلاف سازش ہے۔

Tags: