گلستان جوہر سے لڑکی کے اغواء کے ڈرامے کا ڈراپ سین

August 24, 2015 5:46 pm0 commentsViews: 32

ارم نے گرفتار ملزمان کو بے گناہ قرار دیدیا، اغواء کے الزام میں زیرحراست 2بھائی اور والد رہا
شارع فیصل پولیس نے لڑکی کے اغواء کے الزام میں13سالہ عثمان، 15سالہ حسین اور ان کے والد کو گرفتار کیا تھا
کراچی (اسٹاف رپورٹر) گلستان جوہر سے لڑکی کے اغواء کے ڈرامے کا ڈراپ سین ہوگیا‘ شارع فیصل پولیس نے لڑکی کو اغواء کرنے کے الزام میں13 سالہ نوجوان‘ اس کے بھائی اور والد کو گرفتارکرلیا‘ لڑکی نے تفتیش میں نوجوان پر ہونیوالے الزام کو مسترد کردیا‘ شاہراہ فیصل پولیس نے گلستان جوہر کی رہائشی خاتون صابرہ بی بی نے تھانے میں آکر مقدمہ درج کرادیا کہ17 اگست کو میری بیٹی ارم کو عثمان عابد نامی لڑکے نے اغواء کیا اور گلشن جمال میں قائم گیسٹ ہائوس میں بند کردیا‘ میری بیٹی اپنی جان بچا کر وہاں سے بھاگ گئی اور گھر میں آکر واقع کے بارے میں بتایا۔ پولیس نے13 سالہ عثمان‘ اس کے15 سالہ بھائی حسین اور والد عابد کو گرفتار کرلیا‘شعبہ تفتیش کے انچارج اسلم کولاچی نے بتایا کہ جب پولیس نے ارم کو تھانے بلا کر اس کا بیان لیا تو ارم نے بتایا کہ مجھے عثمان نے اغواء نہیںکیا میں خود اپنی مرضی سے گیسٹ ہائوس چلی گئی تھی‘ اسلم کولاچی نے بتایا کہ ارم کے بیان پر عثمان‘ اس کے بھائی اور والد کو رہا کردیا گیا‘ انہوں نے بتایا کہ معاملہ کچھ اور ہے جو ارم کی والدہ صابرہ بی بی چھپانے کی کوشش کررہی ہے۔

Tags: