وزیراعظم سے ملاقات متحدہ کو تحفظات دور کرنے کی یقین دہانی‘ آج کمیٹی بنے گی

August 25, 2015 12:16 pm0 commentsViews: 22

ہمارا میڈیا ٹرائل کیا جارہا ہے‘ کراچی آپریش کی مخالفت نہیں کی‘ حکومت کو 19 نکات پیش کئے ہیں‘ فاروق ستار
پہلے مرحلے میں الطاف حسین کے خطاب پر پابندی ختم ہوسکتی ہے‘ متحدہ کے تحفظات دور کرنے کیلئے ٹائم فریم واضح کیا جائے گیا
اسلام آباد( خبر ایجنسیاں) وزیر اعظم محمد نواز شریف اور ایم کیو ایم کے درمیان مذاکرات میں اہم پیش رفت ہوئی۔ ایم کیو ایم کے اعتراضات دور کرنے کے لئے کمیٹی بنانے کا فیصلہ کیا گیا جو آج بروز منگل سے کام شروع کر دے گی۔ پیر کی شب مولانا فضل الرحمن نے فریقین کے درمیان کامیاب مذاکرات کے بعد اعلامیہ جاری کرتے ہوئے کہا کہ ایم کیو ایم کی شکایت کا ازالہ کریں گے۔ آج بروز منگل سے کمیٹی تشکیل دی جائے گی۔ جو اپنا کام شروع کر دے گی۔ ایم کیو ایم کی جتنی بھی شکایات ہیں وہ کمیٹی کے سامنے پیش کی جائیں گی۔ کمیٹی قانون کے دائرے میں شکایت کو دور کرکے اس کا ازالہ بھی کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم کو ایم کیو ایم کے استعفوں کی وجوہات سے آگاہ کیا، وزیر اعظم نواز شریف نے ایم کیو ایم کی تمام شکایات کے ازالے کا بھی یقین دلایا۔ انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم کے وفد نے وزیر اعظم کی یقین دہانی کا خیر مقدم کیا۔ جیسے ہی ایم کیو ایم کی شکایات کا ازالہ کیا جائے گا تو ایم کیو ایم اپنے استعفوں کے فیصلے پر نظر ثانی کرے گی۔ بعد ازاں ایم کیو ایم کے وفد کے سربراہ ڈاکٹر فاروق ستار کا کہنا ہے کہ ایم کیو ایم کے19نکات ہیں کمیٹی اس پر غور کرے گی۔ ایم کیو ایم کے45 کے قریب کارکنان ماورائے عدالت قتل کر دئے گئے۔ گزشتہ چند سال سے نا معلوم افراد کی جانب سے ایم کیو ایم کے کارکنان قتل کئے جا رہے ہیں۔ قاتلوں کی گرفتاری امن قائم رکھنے کیلئے ضروری ہے۔ فاروق ستار نے کہا کہ ایم کیو ایم کا میڈیا ٹرائل کیا جا رہا ہے۔ ایم کیو ایم نے کراچی آپریشن کی مخالفت نہیں کی جرائم پیشہ افراد کے خلاف کارروائی میں کوئی اختلاف نہیں کیا جا سکتا۔ اس موقع پر وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا کہ ایم کیو ایم اور حکومت کی سوچ ایک ہے۔ کمیٹی قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے ایم کیو ایم کے تمام تحفظات دور کرے گی۔ علاوہ ازیں ایم کیو ایم کے استعفوں کی واپسی پر تحفظات کے جائزہ کیلئے بنائی جانے والی کمیٹی کے ڈرافٹ اور طے پائے جانے والے ٹائم فریم سے مشروط ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ایم کیو ایم کے منتخب نمائندوں کی پارلیمنٹ میں واپسی میں مزید48 گھنٹے لگ سکتے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ایم کیو ایم کے تحفظات کا اگلا دور آج جبکہ تیسرا دور بدھ کو ہوگا جس میں ایم کیو ایم کے 19 نکاتی تحفظات کو دور کرنے کیلئے طریقہ اور ٹائم فریم واضح کیا جائے گا، تاہم وفاقی حکومت بہتر تعلقات کیلئے پہلے مرحلے میں نجی الیکٹرانک میڈیا پر الطاف حسین کے خطاب کے براہ راست نشر ہونے پر سے پابندی ختم کر سکتی ہے۔

Tags: