سندھ حکومت کے 4 افسران سمیت 9 افراد کی گرفتاری کا فیصلہ

August 25, 2015 1:05 pm0 commentsViews: 21

اینٹی کرپشن کمیٹی کے اجلاس میں بورڈ آف ریونیو اور محکمہ بلدیات کے بدعنوان ملازمین کی گرفتاری کی منظوری دیدی گئی
اجلاس میں پانچ مقدمات کی اوپن انکوائری اور دو مقدمات کی دوبارہ انکوائری کرانے کا حکم بھی دے دیا
کراچی( اسٹاف رپورٹر) حکومت سندھ کی اینٹی کرپشن کمیٹی ون کا اجلاس پیر کو چیف سیکریٹری سندھ محمد صدیق میمن کی صدارت میں منعقد ہوا جس میں 9 محکموں کے مقدمات پر غور کیا گیا۔ اور بورڈ آف ریونیو سندھ اور محکمہ بلدیات کے چار افسروں سمیت 9 افراد کے خلاف مقدمات درج کرنے اور انہیں گرفتار کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ ایک ہفتہ میں اے سی سی ون کا یہ دوسرا اجلاس ہے۔ جبکہ تیسرا اجلاس آئندہ پیر کو ہوگا۔ پیر کو ہونے والے اجلاس میں چیئرمین اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ سندھ سید ممتاز علی شاہ، ڈائریکٹر اینٹی کرپشن سندھ نذر محمد بوذدار اور متعلقہ محکموں کے سیکریٹریز نے شرکت کی۔ اجلاس میں بورڈ آف ریونیو کے محمد نواز بھٹو ( موجودہ ڈی ڈی او وارہ) ریٹائرڈ ٹپیدار محمد نواز جونیجو اور پرائیوٹ شخص رضا محمد معیزی، محکمہ بلدیات کے سابق نگراں ناظم یونین کونسل بھمبر تعلقہ گڑھی یاسین وقار سومرو کے ڈی اے کے ایگزیکٹو انجینئر امیر بھٹی، اصغر علی ایڈووکیٹ، پرائیوٹ اشخاص میں محمد یاسین، سید حیدر علی اور محمد علی خان کے خلاف ایف آئی آر درج کرکے انہیں گرفتار کرنے کا حکم دیا گیا۔ اجلاس میں پانچ مقدمات کی اوپن انکوائری اور دو مقدمات کی دوبارہ انکوائری کا حکم دیا گیا جبکہ ایک مقدمہ ختم کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

Tags: