نیب کی ٹیم پھر سوک سینٹر پہنچ گئی‘ زمینوں کا ریکارڈ طلب

August 25, 2015 1:09 pm0 commentsViews: 22

افسران نے پہلے ریکارڈ دینے سے انکار کیا پھر چند منٹ بعد ہی چائنا کٹنگ کی فائلوں کی دستاویزات حوالے کردیں
نیب کے ساتھ تعاون جاری رکھیں گے‘ ریکارڈ دینے سے منع نہیں کیا گیا‘ ایڈمنسٹریٹر کراچی کی وضاحت
کراچی( نیوز ڈیسک) قومی احتساب بیورو( نیب) کراچی نے بھی بلدیہ عظمیٰ کراچی کی اربوں روپے کی اراضی پر چائنا کٹنگ کے زریعے غیر قانونی الاٹمنٹ کے علاوہ دیگر بد عنوانیوں کی تحقیقات کا آغاز کردیا‘ پیر کو نیب کراچی کی ٹیم بلدیہ عظمیٰ کراچی کے مرکزی دفتر سوک سینٹر پہنچ گئی اور ریکارڈ طلب کیا‘ پہلے تو افسران نے نیب حکام کو ریکارڈ فراہم کرنے سے انکار کردیا تاہم چند ہی منٹوں کے بعد کے ایم سی کے افسران نے نیب کو چائنا کٹنگ کے پلاٹوں کی فائلوں کے علاوہ نیب کومطلوب ریکارڈ اور دستاویزات فراہم کردیں‘ اس حوالے سے ایڈمنسٹریٹر کراچی شعیب صدیقی نے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ نیب سمیت کسی بھی ادارے کو ریکارڈ دینے سے انکار نہیں کیا تاہم ریکارڈ کی فراہمی سرکاری طریقہ کار کے مطابق ہی کی جائیگی‘ نیب کے ساتھ پہلے بھی تعاون کیا آئندہ بھی ہر ممکن تعاون کریں گے‘ نیب کراچی کے ذرائع کے مطابق بلدیہ عظمیٰ کراچی میں مالی بد عنوانیوں‘ غیرقانونی بھرتیوں ‘چائنا کٹنگ کے ذریعے سرکاری اراضی پر قبضے اور فنڈز میں خوردبرد کی بڑے پیمانے پر تحقیقات شروع کردی گئی ہیں جبکہ نیب کراچی نے ایم ڈی اے‘ ایل ڈی اے کے علاوہ دیگر سرکاری محکموں میں پہلے ہی تحقیقات شروع کررکھی ہے‘ ذرائع کے مطابق نیب کراچی کو کے ایم سی میں2008 ء سے ہونیوالے ترقیاتی منصوبوں کی تفصیلات اور فنڈز کا ریکارڈ بھی فراہم کیا گیا ہے اور کے ایم سی کی اراضی‘ قیمتی پلاٹوں اور دیگر اثاثوں کی تفصیلات بھی فراہم کی گئی ہیں۔

سوک سینٹر پر مسلسل چھاپوں کے بعد ملازمین میں خوف
احتساب بیورو کی ٹیم اور ایف آئی اے کا ریکارڈ لینے کیلئے آنا معمول بن گیا ہے
کراچی( اسٹاف رپورٹر)پیر کو بلدیہ عظمیٰ کراچی کے مرکزی دفتر سوک سینٹر پر خوف کے سائے منڈلاتے رہے یکے بعد دیگر تحقیقاتی اداروں کے چھاپوں کے بعد افسران اور عملے میں خوف و ہراس پھیل گیا۔ کے ایم سی سوک سینٹر میں لینڈ ڈپارٹمنٹ کے دفتر میں پہلے ایف آئی اے کے چھاپہ مار ٹیم پہنچی اور متعلقہ محکموں سے ریکارڈ طلب کیا اسی اثناء میں قومی احتساب بیورو کراچی کی ٹیم ایڈمنسٹریٹر کراچی کے دفتر پہنچ گئی اور وہاں موجود افسران سے چائنا کٹنگ اور دیگر اراضی کا ریکارڈ مانگ لیا اس دوران بعض افسران نے دفاتر سے غائب ہونے میں ہی عافیت سمجھی اور افسران کی بڑی تعداد پیر کی دوپہر ہی اپنے گھر روانہ ہوگئی‘ ذرائع نے بتایا کہ کے ایم سی سوک سینٹر سمیت دیگر ترقیاتی اداروں کے دفاتر پر تحقیقاتی اداروں کے چھاپوں اور ریکارڈ جمع کرکے لے جانا معمول بن گیا ہے جبکہ ان اداروں کے ایک درجن سے زائد افسران اور ملازمین گرفتار بھی ہوچکے ہیں۔

Tags: