پابندی کے بعد سی این جی رکشائوں کی قیمتیں گرگئیں

August 25, 2015 1:22 pm0 commentsViews: 53

فروخت میں 50 ہزار روپے کی کمی‘2 لاکھ 90 ہزار کا رکشہ 2 لاکھ 20 ہزار میں فروخت کیا جارہا ہے
بیرون شہر سے رکشائوں کی ترسیل جاری‘ حکومتی پالیسی سے رکشہ اونرز کا کروڑوں کا نقصان ہوا‘ محمد عدنان
کراچی( کامرس رپورٹر) کراچی میں ڈی آئی جی ٹریفک کی جانب سے7 اور 9 سیٹر سی این جی رکشوں پر پابندی کے باوجود بیرون شہر سے نہ صرف ان رکشوں کی ترسیل جاری ہے بلکہ شہر کے مختلف مقامات پر آٹو ڈیلرز انہیں دو لاکھ20ہزار روپے میں فروخت کررہے ہیں پابندی سے قبل مذکورہ ر کشہ دستاویزات سمیت دو لاکھ 90 ہزار میں فروخت ہورہا تھا ‘پولیس کی جانب سے بھاری جرمانوں اور 6+1 اور 8+1 رکشوں کی فروخت کا سلسلہ کافی حد تک سست ہوگیا ہے جس کی وجہ سے ان کی قیمتوں میں بھی تقریباً50 ہزار روپے تک کمی واقع ہوئی ہے‘ ادھر سی این جی رکشہ ایسوسی ایشن کے جنرل سیکریٹری محمد عدنان نے ان رکشائوں کو غیر قانونی قرار دینے کی سخت مذمت کرتے ہوئے سوال کیا ہے کہ غیر قانونی ہونے کے باوجود منسٹری آف آٹو موبائل نے کمپنیوں کو اس کی تیاری کی اجازت کیوں دی‘ جبکہ خریدار سے روڈ پرمٹ کی مد میں10ہزار اور فٹنس سرٹیفکیٹ کے5 ہزار روپے بھی وصول کئے گئے‘ ناقص حکومتی پالیسی کے باعث سی این جی رکشہ اونرز کو نہ صرف کروڑوں روپے کا نقصان ہوا ہے انہوں نے کہا کہ اس نا انصافی اور ظلم کیخلاف ہم برسرپیکار ہیں اور فتح حق ہی کی ہوگی۔

Tags: