کراچی آپریشن کے جانبدارانہ ہونے کے ثبوت پیش کرسکتا ہوں‘ الطاف حسین

August 27, 2015 4:59 pm0 commentsViews: 24

آپریشن دہشتگردوں‘ انتہا ء پسندوں اور جہادی تنظیموں کیخلاف نہیں بلکہ صرف ایم کیو ایم کیخلاف ہورہاہے
جنرل راحیل نے نیک نیتی سے آپریشن شروع کیا لیکن بعض لوگ اس کے رخ کو غلط سمت موڑ رہے ہیں‘ آرمی چیف نوٹس لیں
کرپشن کیسوں میں گرفتاریاں صرف کراچی اور سندھ میں ہورہی ہیں‘ سندھ حکومت بزدل بن کر بیٹھی ہوئی ہے‘ قائد تحریک
کراچی( اسٹاف رپورٹر) ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین نے کہا ہے کہ کراچی آپریشن کے بارے میں کہا گیا تھا کہ یہ کسی سیاسی جماعت کے خلاف نہیں کیا جا رہا بلکہ کرمنلز، دہشت گردوں اور انتہاء پسند جہادی تنظیموں اور فرقہ وارانہ فساد کرنے والوں کے خلاف کیا جائے گا لیکن کراچی میں آپریشن صرف ایم کیو ایم کے خلاف ہو رہا ہے آپریشن کے دوران ایم کیو ایم کے کارکنوں کو گرفتار کرکے ماورائے عدالت قتل اور لاپتہ کیا گیا۔ میں دنیا کی کسی بھی عدالت میں یہ ثابت کر سکتا ہوں کہ یہ آپریشن جانبدار انہ ہے۔ انہوں نے جنرل راحیل شریف کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے نیک نیتی کے ساتھ آپریشن شروع کیا تھا لیکن کچھ لوگ اس آپریشن کا رخ غلط سمت میں موڑ رہے ہیں۔ آپ اس کا نوٹس لیں انہوں نے ان خیالات کا اظہار آج نائن زیرو پر ایم کیو ایم کی رابطہ کمیٹی اور تنظیمی شعبہ جات کے ذمہ داروں کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ الطاف حسین نے کہا کہ گزشتہ روز جنرل راحیل شریف نے کراچی کا دورہ کیا اور گیریژن افسران سے خطاب کرتے ہوئے اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ دہشت گردوں اور جرائم پیشہ عناصر کے خلاف کراچی آپریشن جاری رہے گا۔ دہشت گردوں کے خلاف آپریشن کرنا بڑی اچھی بات ہے لیکن صرف کراچی کا لفظ استعمال کرنے کے بجائے ان کی جانب سے پورے پاکستان سے دہشت گردوں کا صفایا کرنے کی بات کی جاتی تو مناسب بات ہوتی، انہوں نے کہا کہ اب تک کرپشن کے کیسوں میں صرف کراچی یا سندھ سے گرفتاریاں کی جا رہی ہیں اور سندھ کی حکومت پوری کابینہ کے ساتھ بزدل بن کر بیٹھی ہوئی ہے۔

Tags: