کراچی میں تمام غیر قانونی سائن بورڈز ہٹائے جائیں‘سپریم کورٹ

August 27, 2015 5:05 pm0 commentsViews: 38

حکم پر عملدر آمد نہیں ہوا تو متعلقہ اداروں کے سربراہ جوابدہ ہوں گے اور ان کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی ہوگی
شہر کی سڑکوں اور فٹ پاتھوں پر لگائے گئے ہورڈنگز تمام غیر قانونی ہیں‘ یہ سب اب نظر نہیں آنے چاہئیں‘ عدالت کے ریمارکس
کراچی( اسٹاف رپورٹر) سپریم کورٹ نے کہا ہے کہ تمام غیر قانونی سائن بورڈز اور ہورڈنگز ہٹا کر رپورٹ پیش کی جائے۔ اگر عدالتی حکم پر عمل نہیںکیا گیا تو اداروں کے سربراہ جوابدہ ہوں گے اور ان کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کی جائے گی۔ بدھ کو جسٹس انور ظہیر جمالی اور جسٹس گلزار احمد پر مشتمل دو رکنی بنچ نے شہر بھر میں سائن اور ہورڈنگز بورڈ کی تنصیب سے متعلق دائر درخواست کی سماعت کی۔ سماعت کے دوران کلفٹن، شاہ فیصل، کورنگی کنٹونمنٹ بورڈ اور کے ایم سی کی جانب سے رپورٹ پیش کی گئی جس پر عدالت کا کہنا تھا کہ کسی بھی ادارے کی رپورٹ عدالت کو مطمئن نہیں کر سکی ہے۔ اس موقع پر عدالت نے کہا کہ سپریم کورٹ کے مزید کسی حکم کا انتظار کئے بغیر شہر سے تمام ہورڈنگز بورڈ ہٹا دئیے جائیں اور اگر عدالت حکم پر عمل نہ ہوا تو متعلقہ اداروں کے سربراہ جوابدہ ہوں گے اور ان کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کی جائے گی۔ سماعت کے موقع پر جسٹس گلزار احمد نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ شہر کو ہورڈنگز کے بغیر نہیں چلایا جا سکتا ہے جسٹس انور ظہیر جمالی نے ریمارکس دئیے کہ 20 اور 60 فٹ کے سائن بورڈز لگادیئے گئے ہیں آندھی اور طوفان کے دوران گرتے ہیں اور اس کے نتیجے میں شہر کے لوگ مرچکے ہیں لیکن کسی کو شہریوں کا خیال نہیں انہوں نے کہا کہ ایسا کریں لوگوں کے ماتھوں پر بھی اشتہار لگا کر کھڑا کردیں جسٹس گلزار احمد نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ سائن بورڈ نصب کرکے شہر کراچی کو بد شکل کر دیا گیا ہے اور کیا اب ہم سب اپنے ماتھوں پر اشتہار لگا کر کھڑے ہوجائیں انہوں نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آپ لوگ ہوتے کون ہیں ان بورڈ ز کو قانونی اور غیر قانونی قرار دینے والے شہر کی سڑکوں اور فٹ پاتھوں پر لگائے گئے بڑے بڑے ہورڈنگز سب غیر قانونی ہیں اب شہر کی سڑکوں پر کوئی ہورڈنگز اور بل بورڈز نظر نہیں آنا چاہیے۔علاوہ ازیں سماعت4 ہفتے کیلئے ملتوی کر دی گئی ہے۔

Tags: