قیدیوں کیلئے خوراک و ادویات کی خریداری میں غبن کی تحقیقات

August 27, 2015 5:11 pm0 commentsViews: 68

سندھ اسمبلی کی پبلک اکائونٹس کمیٹی نے قیدیوں کیلئے خوراک اور پیٹرول اخراجات میں 14 کروڑ روپے کی بدعنوانی کا نوٹس لیتے ہوئے ریکارڈ طلب کرلیا
سندھ پولیس کیلئے بکتر بند گاڑیاں‘ بلٹ پروف جیکٹس اور دیگر اسلحہ کی خریداری کیلئے ہیوی انڈسٹریز ٹیکسلا سے معاہدہ ہوگیا ہے‘ سیکریٹری داخلہ
کراچی( اسٹاف رپورٹر) سندھ اسمبلی کی پبلک اکائونٹس کمیٹی نے صوبے کی جیلوں میں قیدیوں کے لیے دوائوںاورخوراک کی خریداری اور پیٹرول اخراجات میں 14 کروڑ روپے کی بدعنوانیوں کا نوٹس لے لیاہے جبکہ سات سال سے آڈٹ نہ کرانے پر اخراجات کو مشکوک قرار دیتے ہوئے ریکارڈبھی طلب کر لیاہے۔بدھ کوسندھ اسمبلی کی پبلک اکائونٹس کمیٹی کا اجلاس چیئرمین سلیم رضاجلبانی کی صدارت میں سندھ اسمبلی کے کمیٹی روم نمبر 1 میںمنعقدہوا۔ کمیٹی نے قیدیوں کے لیے خوراک اور دوائوںکی خریداری میں خرد برد کی تحقیقات سب کمیٹی کے حوالے کردی ہیں۔کمیٹی کی طرف سے جیلوں میں کرپشن کا نوٹس لیے جانے پر جیل حکام نے سات سال بعد ریکارڈ فراہم کرنے کی پیشکش کی۔کمیٹی نے سات سالہ ریکارڈ آئندہ چوبیس گھنٹوں میں دکھانے کی پیش کش کو مسترد کر کے چھان بین کا حکم دیا۔آئی جی جیل خانہ جات نصرت منگن نے ریکارڈ میں تاخیر پر غلطی کا اعتراف کیا۔ علاوہ ازیں سیکرٹری محکمہ داخلہ حکومت سندھ مختار سومرو نے کہاہے کہ سندھ پولیس کے لیے جدید اسلحہ کی خریداری کے لیے ہیوی انڈسٹریز ٹیکسلا سے معاہدہ ہوگیا ہے۔ سندھ اسمبلی کی پبلک اکائونٹس کمیٹی کے اجلاس کے بعدسندھ اسمبلی کے کمیٹی روم ون میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ سندھ پولیس کے لیے جدید اسلحہ کی خریداری اب ہیوی انڈسٹریز ٹیکسلا سے ہوگی ۔انہوں نے بتایا کہ بکتر بند گاڑیاں،بلٹ پروف جیکٹس کی خریداری طے پاگئی ہے۔سیکرٹری داخلہ سندھ نے کہا کہ پولیس میں کرپشن کے تمام معاملات پرانے ہیں جب کہ پولیس بھرتیوں میں شکایات کا جواب آئی جی سندھ سپریم کورٹ میں جمع کرائیں گے۔

Tags: